دہلی میں آلودگی ’سنگین‘ سطح پر، سانس لینا ہوا مشکل، فی الحال راحت کے آثار نہیں

دہلی میں آلودگی ’سنگین‘ سطح پر، سانس لینا ہوا مشکل، فی الحال راحت کے آثار نہیں

Oct 30, 2019 01:24 PM IST | Updated on: Oct 30, 2019 01:26 PM IST
دہلی میں آلودگی ’سنگین‘ سطح پر، سانس لینا ہوا مشکل، فی الحال راحت کے آثار نہیں

دہلی میں آلودگی ’سنگین‘ سطح پر، فی الحال راحت کے آثار نہیں

نئی دہلی۔ دیوالی کے بعد دارالحکومت ایک بار پھر گیس چیمبر بننے کے دہانے پر پہنچ گیا ہے اور آلودگی کی سطح ’شدیدترین‘ کے زمرے میں پہنچ گئی ہے اور ان حالات سے جمعہ تک راحت کی امید بھی نہیں ظاہر کی جا رہی ہے۔ دارالحکومت میں دہلی میں بدھ کو صبح پی ایم 2.5 کی سطح 500 تک پہنچ گئی اور پی ایم 10 کی سطح 379 تک۔ اس کے بعد کی صورت حال ’ ہنگامی ‘ مانی جاتی ہے۔ دہلی ہی نہیں، اس سے متصل قومی دارالحکومت خطہ کے علاقوں میں بھی برا حال ہے۔

دہلی میں آلودگی سے عوام بری طرح متاثر ہیں تو سیاسی پارٹیاں ایک دوسرے پر الزام تراشیاں کررہی ہیں۔ لوگ دم گھونٹ موسم سے نجات حاصل کرنے کے لئے ماسک لگا کر سڑکوں پر نظر آرہےہیں۔ بصارت(ویژوولٹی) کی حالت بھی بہت اچھی نہیں ہے۔ دہلی میں حکمراں عام آدمی پارٹی (آپ) کا کہنا ہے کہ پنجاب اور ہریانہ میں دھان کی پرالی جلانے سے دہلی کی آلودگی میں خطرناک حد تک اضافہ ہوا ہے۔

دہلی میں آلودگی ’سنگین‘ سطح پر دہلی میں آلودگی ’سنگین‘ سطح پر

Loading...

آپ کے ترجمان دلیپ پانڈے نے کہا کہ دہلی میں آلودگی سے نجات حاصل کرنے کے لئے تمام سیاسی پارٹیوں کو ایک ساتھ آنا چاہئے۔ پارٹی کا کہنا ہے کہ آلودگی کے مسئلہ سے تنہا دہلی حکومت ہی نجات نہیں دلا سکتی ہے۔ مرکزی آلودگی کنٹرول بورڈ (سي پی سي بی) کے مطابق دہلی کی آب و ہوا بدھ کو ’سنگین‘ زمرہ میں رہی اور آلودگی کا اوسط انڈیکس 416 رہا۔

دہلی میں آسمان میں دھواں اور دھند چھائی ہوئی ہے۔ سنگین سطح تک پہنچے والی آلودگی کے لئے دیوالی کے موقع پر آتش بازی چھوڑے جانے اور پنجاب اور ہریانہ میں پرالی جلائے جانے کو بنیادی وجہ بتائی جا رہی ہے۔ منگل کو وزیر اعلی اروند کجریوال نے ہریانہ اور پنجاب حکومتوں سے دہلی میں فضائی آلودگی کی صورت حال اور خراب ہونے سے بچانے کے لئے ٹھوس قدم اٹھانے کی اپیل کی ہے۔ آلودگی کی وجہ سے لوگوں کو سانس لینے میں تو دقت ہو ہی رہی ہے، گلے کی سوزش اور چکر آنے کے ساتھ ہی آنکھوں کی جلن کی شکایتیں تیزی سے بڑھی ہیں۔ بزرگوں اور بچوں کا اور بھی برا حال ہے اور سانس لینے کے مریض کی تکلیفوں کا انداز نہیں لگایا جا سکتا۔ راماكرشنا پورم میں بدھ کی صبح آٹھ بجے پی ایم 2.5 کی سطح 192 تو پی ایم 10 کے 167 رہی۔

delhi2

محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ ہوا کا بہاؤ تیز نہ ہونے کی وجہ سے آلودگی کا دباؤ دہلی اور آس پاس کے علاقوں میں تھم گیا ہے اور اگلے دو دن تک حالات ایسے ہی رہنے کا امکان ہے۔ ہواؤں کا رخ شمال مغرب کی جانب ہونے سے پرالی کا دھواں تیزی سے دہلی کی طرف آ رہا ہے۔ گزشتہ دو دن کے دوران پرالی جلانے میں بھی تیزی دیکھنے کو ملی ہے۔ منگل کو دہلی میں آلودگی کا انڈیکس 400 تو غازی آباد میں 446 تھا جبکہ نوئیڈا میں یہ 439 رہا۔

Loading...