سی او کو دھمکی دینے کا معاملہ: یوگی نے سواتی سنگھ کے وائرل آڈیو کی جانچ کا حکم دیا

وائرل ویڈیو میں سواتی سنگھ کینٹ کی ڈویژنل افسر بینو سنگھ سے پوچھ رہی ہیں کہ رئیل اسٹیٹ کی کمپنی انسل گروپ کے خلاف ایف آئی آر درج کی جا رہی ہے جبکہ اوپر سے حکم ہے کہ کوئی نئی ایف آئی آر درج نہ کی جائے۔

Nov 16, 2019 02:32 PM IST | Updated on: Nov 16, 2019 02:33 PM IST
سی او کو دھمکی دینے کا معاملہ: یوگی نے سواتی سنگھ کے وائرل آڈیو کی جانچ کا حکم دیا

یوگی نے سواتی سنگھ کے وائرل آڈیو کی جانچ کا حکم دیا

لکھنؤ۔ وزیراعلی یوگی آدتیہ نے مملکتی وزیر(آزادانہ چارج) سواتی سنگھ کی ایک پولیس افسر سے بات چیت کی وائرل آڈیو کی جانچ کا حکم دیا ہے ۔ وزیراعلی نے سنیچر کی صبح گورکھپور روانہ ہونے سے قبل ڈائرکٹر جنرل آف پولیس او پی سنگھ کو اپنی سرکاری رہائش گاہ پانچ کالی داس مارگ پر بلایا اور کہا کہ اس معاملے کی پوری جانچ رپورٹ جلد ہی دیں۔وزیراعلی خاتون وزیر کی اس حرکت سے ناراض ہیں کیونکہ اس سے حکومت کی شبیہ پر اثر پڑتا ہے۔

ڈی آئی جی نے لکھنؤ کے سینئر سپرنٹندنٹ آف پولیس سے پورے معاملے کی جانچ کر کے اس بات کی تصدیق کرنے کو کہا ہے کہ آیا آڈیو صحیح ہے کہ نہیں۔ وائرل ویڈیو میں سواتی سنگھ کینٹ کی ڈویژنل افسر بینو سنگھ سے پوچھ رہی ہیں کہ رئیل اسٹیٹ کی کمپنی انسل گروپ کے خلاف ایف آئی آر درج کی جا رہی ہے جبکہ اوپر سے حکم ہے کہ کوئی نئی ایف آئی آر درج نہ کی جائے۔ اس کےجواب میں پولیس افسر نے کہا کہ جانچ کے بعد ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔ اس کے بعد سواتی سنگھ نے پولیس افسر کو ڈانٹا اور دھمکی دی کہ اگر یہاں کام کرنا ہے تو میرے پاس آئیے اور سب ٹھیک سے سمجھ لیجئے۔ پولیس افسر نے کہا کہ سواتی سنگھ وزیر ہیں اور ان کے فون آتے رہتے ہیں۔

وہیں دوسری جانب سواتی سنگھ نے دھمکی دینے کے الزام کو بے بنیاد بتایا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پولیس افسر خود کو انسپکٹر جنرل آف پولیس کا رشتہ دار بتاتی ہیں اور غریبوں کے خلاف ایف آئی آر درج کرتی ہیں۔ میں نے خود ڈی جی پی سے انہیں ہٹانے کی سفارش کی ہے۔ انہیں عوامی نمائندے کا آڈیو وائرل کرنے کا حق کس نے دیا۔

Loading...

Loading...