منگلورو: ’’مسلمانوں کے بغیر ہندو راشٹر ‘ کی وکالت کر رہا تھا شخص، طلبہ نے کر دی پٹائی

پولیس نے بتایا کہ منجو ناتھ کے طلبہ کی بات چیت میں دخل دینے اور ہندو راشٹر کی وکالت کرنے سے ناراض طلبہ کی پہلے تو اس سے جم کر کہا سنی ہوئی۔ اس کے بعد اچانک طلبہ نے منجو ناتھ کو پیٹنا شروع کر دیا۔

Sep 26, 2019 04:57 PM IST | Updated on: Sep 26, 2019 04:57 PM IST
منگلورو: ’’مسلمانوں کے بغیر ہندو راشٹر ‘ کی وکالت کر رہا تھا شخص، طلبہ نے کر دی پٹائی

علامتی تصویر

منگلورو۔ کرناٹک میں منگلورو کے ایک مال میں ’ ہندو راشٹر‘ کی وکالت کر رہے ایک نوجوان کی طلبہ نے جم کر پٹائی کر دی۔ پولیس نے نوجوان منجو ناتھ کی شکایت پر معاملہ درج کر لیا ہے۔ واردات میں شامل دو ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ وہیں، اس پوری واردات کا ایک ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہو گیا ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ویڈیو میں ملنے والے ثبوتوں کی بنیاد پر ملزمان کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

واقعہ بدھ کی صبح 11.30 کا ہے۔ دراصل، مال میں بیٹھے کچھ طلبہ قومی اہمیت کے حامل مسائل پر آپس میں بات کر رہے تھے۔ منجو ناتھ ان کے نزدیک ہی دوسری میز پر بیٹھا تھا۔ طلبہ کی بات چیت سن کر وہ ان کے پاس گیا اور ہندو راشٹر کی وکالت کرنے لگا۔ ٹائمس آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق، منجو ناتھ نے طلبہ سے کہا کہ ہندوستان ایک ہندو راشٹر ہے جہاں مسلمانوں کو نہیں آنا چاہئے تھا۔ اس کے بعد اس کی طلبہ سے جم کر کہا سنی ہوئی۔

Loading...

پولیس نے معاملہ کو طول نہیں دینے کی اپیل کی

پولیس نے بتایا کہ منجو ناتھ کے طلبہ کی بات چیت میں دخل دینے اور ہندو راشٹر کی وکالت کرنے سے ناراض طلبہ کی پہلے تو اس سے جم کر کہا سنی ہوئی۔ اس کے بعد اچانک طلبہ نے منجو ناتھ کو پیٹنا شروع کر دیا۔ اس دوران کسی نے اس پورے واقعہ کا ویڈیو بنا لیا جو سوشل میڈیا پر وائرل ہو گیا ہے۔

Loading...