ایودھیامتنازعہ اراضی فیصلہ: ایک گرفتاری جس سے بی جے پی کاسیاسی قد کئی گنا بڑھا

ایودھیا اراضی تنازعہ پر سپریم کورٹ کے فیصلے سے کچھ فریقوں کو مایوسی ہاتھ لگی تو کچھ کو راحت ملی لیکن اس فیصلے سے بی جے پے کے لیڈر لال کرشن اڈوانی یقینی طور پر خوش ہوں گے۔

Nov 10, 2019 11:33 AM IST | Updated on: Nov 10, 2019 12:41 PM IST
ایودھیامتنازعہ اراضی فیصلہ: ایک گرفتاری جس سے بی جے پی کاسیاسی قد کئی گنا بڑھا

ایودھیا اراضی تنازعہ پر سپریم کورٹ کے فیصلے سے کچھ فریقوں کو مایوسی ہاتھ لگی تو کچھ کو راحت ملی لیکن اس فیصلے سے بی جے پے کے لیڈر لال کرشن اڈوانی یقینی طور پر خوش ہوں گے۔ سپریم کورٹ نے ایودھیا میں رام مندر کا راستہ صاف کرنے والا فیصلہ ٹھیک ان کے 92 ویں یوم پیدائش کے ایک دن بعد دیا ہے۔

ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کیلئے لال کرشن اڈوانی نے سومناتھ سے ایودھیا تک کی رتھ یاترا نکالی تھی۔ 23 اکتوبر 1990 کو بہار کے اس وقت کے وزیر اعلیٰ لالو پرساد یادو نے اڈوانی کی رتھ یاترا بہار کے سمستی پور میں روک دی اور انہیں گرفتار کر لیا گیا۔ اس واقعے نے آنے والے سالوں میں ملک کی سیاست کا رخ ہی موڑ کر رکھ دیا اور بی جے پی کو اس کا سب سے زیادہ فائدہ ہوا۔

Ayodhya Case, Ayodhya Dispute, Ram Janmabhoomi, Babri Masjid Dispute, Supreme Court on Ayodhya Case, अयोध्या केस, अयोध्या विवाद, राम जन्मभूमि, बाबरी मस्जिद विवाद, Ram Mandir, राम मंदिर, अयोध्या मामले पर सुप्रीम कोर्ट, IAS officer Afzal Amanullah, अफजल अमानुल्लाह, Lal Krishna Advani, लालकृष्ण आडवाणी, bihar, बिहार, ram rath yatra, राम रथयात्रा, VHP, rss, विश्व हिंदू परिषद, वीएचपी, आरएसएस رام مندر کی تحریک کو فروغ دینے کے لئے اڈوانی نے سومناتھ سے رتھ یاترا کا آغاز کیا تھا۔ ( فائل تصویر)۔

Loading...

اڈوانی کی گرفتاری کا اثر بی جے پی پر پڑا

سمستی پور میں جب اڈوانی کی گرفتاری کی گئی تب وہ بی جےپی  صدر تھے اور ڈرامائی طور سے اس کا اثر پارٹی کی سیاست پر پڑا۔ تجربہ کار صحافی ایس ڈی نارائن بتاتے ہیں 'وہ صبح (تڑکے)  کا وقت تھا جب فون کی گھنٹی بجی۔ میں حیران تھا کہ  دوسری طرف وزیر اعلیٰ تھے۔ انہوں نے کہا کتنا سوتے ہیں جبکہ میں جانتا تھا کہ پرساد خود دیر سے اٹھتے ہیں، میں نے پوچھا کہ اتنی جلدی اٹھنے کی وجہ کیا ہے'۔

نارائن نے بتایا، 'انہوں نے جواب دیا بابا (اڈوانی) کو پکڑ لیا ہے۔ ملک اور کئی ریاستوں کی سرکاریں رام رتھ یاترا کی آنچ محسوس کر رہیں تھی اور اسے روکنے کیلئے کچھ کرنا تھا۔ آخر میں بہار کے وزیر اعلیٰ نے اسے روکنے کا فیصلہ کیا'۔

اڈوانی کا گرم جوشی سے ہوا تھا استقبال

سمستی پور  کے رہنے والے ایک صحافی اس وقت ہندی اخبار میں نئے۔نئے صحافی تھے۔انہوں نے یاد کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت ماحول کشیدہ تھا۔ انہوں نے کہا، 'مجھے کہا گیا کہ حاجی پور سے سمستی پور تک رتھ یاترا کے ساتھ جاؤں۔ اڈوانی کا گرم جوشی سے استقبال کیا گیا لیکن حیرت انگیز طور سے اس وقت آسمان میں ہیلی کاپٹر منڈرا رہے تھے۔ ہمارے من میں تھا کہ کچھ بڑا ہونے والا ہے'۔

مرکزی وزیر آرکے سنگھ اس وقت سمستی پور کے ڈی ایم ہوا کرتےتھے۔ ( فائل تصویر)۔ مرکزی وزیر آرکے سنگھ اس وقت سمستی پور کے ڈی ایم ہوا کرتےتھے۔ ( فائل تصویر)۔

آرکے سنگھ نے دی تھی گرفتاری کی خبر

اڈوانی کی گرفتاری کی خبر صحافیوں کو سمستی پور کے ڈی ایم آر کے سنگھ کی طرف سے دی گئی۔ نارائن نے بتایا کہ اڈوانی کی گرفتاری سے پہلے سبھی ٹیلی فون بند کردئے گئے اور اطلاع کیلئے صرف سرکاری بریفنگ ہی ذریعہ تھا کیونکہ اس وقت موبائل فون یا انٹرنیٹ کی سہولت نہیں تھی اور فیکس مشین شاید ہی ہی ہوتی تھیں۔  آرکے سنگھ بعد میں یونین کے ہوم سکریٹری اب مرکزی وزیر بن گئے۔

اڈوانی کو کچھ دن بعد رہاکرنے سے پہلے طیارے سے موجود جھار کھنڈ کے دمکا میں واقع گیسٹ ہاؤس لے جایا گیا۔ نارائن نے کہا اس گرفتاری کے ساتھ ہی اڈوانی کی رتھ یاترا ضرور اچانک ختم ہوگئی لیکن اس سے بڑے پیمانے پر احتجاجی مظاہرہ اور مختلف شہروں میں فرقہ وارانہ فساد شروع ہوگئے۔ خاص طو سے شمالی ہندستان میں۔

لال کرشن اڈوانی کی جب گرفتاری ہوئی تھی تب لالو پرساد یادو بہار کے وزیر اعلیٰ تھے( فائل تصویر)۔ لال کرشن اڈوانی کی جب گرفتاری ہوئی تھی تب لالو پرساد یادو بہار کے وزیر اعلیٰ تھے( فائل تصویر)۔

بی جے پی کا سیاسی قد کئی گنا بڑھا

اڈوانی کی گرفتاری سے نہ صرف بی جے پی کو فائدہ ہوا اور پارٹی کا سیاسی قد کئی گنا بڑھ گیا لیکن اس سے لالو کو بھی فائدہ ہوا اور انہوں نے خود کو بھگوا مخالف خیمے کے لیڈر کے طور پر قائم کیا۔ مسلم لیڈران کی کمی کی وجہ سے لالو صرف پسماندہ طبقات کے ہی نہیں ، اقلیتی برادری کے حقوق کے لئے لڑنے والے لیڈر  کے طور پر ابھرے۔ سمستی پور باب کے دونوں ہیرو اب سرخیوں سے دور ہیں۔ اڈوانی بی جے پی کے رہنمائی بورڈ میں شامل ہیں ، جبکہ لالو جھارکھنڈ کی ایک جیل میں وقت گزار رہے ہیں۔

Loading...