اجودھیا تنازع میں سپریم کورٹ آج صبح 10.30 بجے سنائے گا فیصلہ ، وزیرا عظم مودی نے کہا : امن برقرار رکھیں

دہائیوں قدیم بابری مسجد – رام جنم بھومی تنازع کا تاریخی فیصلہ کل ہفتہ کو ساڑھے 10 بجے سنایا جائے گا ۔

Nov 08, 2019 09:23 PM IST | Updated on: Nov 09, 2019 07:59 AM IST
اجودھیا تنازع میں سپریم کورٹ آج صبح 10.30 بجے سنائے گا فیصلہ ، وزیرا عظم مودی نے کہا : امن برقرار رکھیں

اجودھیا تنازع میں کل آئے گا سپریم کورٹ کا تاریخی فیصلہ

سپریم کورٹ اجودھیا کے رام جنم بھومی - بابری مسجد زمین تنازع میں سنیچر کو 10.30 بجے تاریخی فیصلہ سنائے گا۔ چیف جسٹس رنجن گوگوئی، جج ایس اے بوبڈے، جج ڈی وائی چندر چوڑ، جج اشوک بھوشن اور جج ایس عبدالنذیر کی آئینی بنچ آج صبح ساڑھے دس بجے اپنا فیصلہ سنائے گی۔

سپریم کورٹ کی ویب سائٹ پر جمعہ کی شام ایک نوٹس جاری کرکے اس بارے میں معلومات دی گئی ہے۔ عام طورپر سنیچر کو سپریم کورٹ میں چھٹی ہوتی ہے اور ایسی امید ظاہر کی جارہی تھی کہ معاملہ میں 13 سے 15 نومبر کے بیچ فیصلہ آئے گا ، لیکن غیرمتوقع طورپر فیصلے کے لئے کل کی تاریخ مقرر کی گئی ہے۔

Loading...

اس سے پہلے آج چیف جسٹس رنجن گوگوئی نے اترپردیش کے چیف سکریٹری اور ڈائریکٹر جنرل آف پولیس سے ملاقات کرکے اجودھیا اور ریاست کے دیگر حصوں میں امن و قانون نظام کا جائزہ لیا تھا۔ ذرائع کے مطابق سپریم کورٹ رجسٹری اور چیف جسٹس نے اجودھیا رام جنم بھومی۔بابری مسجد زمین متنازعہ معاملہ پر اجودھیا اور ریاست کے دیگر حساس مقامات میں صورتحا ل کا جائزہ لیا۔ریاست کے اعلی حکام نے جج گوگوئی کو بتایا کہ وہ پوری طرح تیار ہیں اور امن وقانون قائم رکھنے کے لئے تمام ضروری اقدامات کئے گئے ہیں۔

ادھر سپریم کورٹ کے فیصلہ کے پیش نظر وزیر اعظم مودی نے ٹویٹ کرکے ملک کے لوگوں سے امن برقرار رکھنے  کی اپیل کی ہے ۔ وزیر اعظم مودی نے ٹویٹ کرکے کہا کہ اجودھیا پر کل سپریم کورٹ کا فیصلہ آرہا ہے ۔ گزشتہ کچھ مہینوں سے سپریم کورٹ میں مسلسل اس موضوع پر سماعت ہورہی تھی ۔ پورا ملک پرجوش نظر آرہا تھا ۔ اس دوران سماج کے سبھی طبقوں کی طرف سے ہم آہنگی کا ماحول برقرار رکھنے کیلئے کی گئی کوششیں تعریف کے قابل ہیں ۔

دریں اثنا اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے بھی ایک اپیل جاری کرکے لوگوں سے امن برقرار رکھنے کی اپیل کی ہے ۔ یوگی نے کہا کہ اس فیصلہ کو جیت یا ہار سے جوڑ کر نہ دیکھا جائے ۔ یوگی نے کہا کہ اترپردیش انتظامیہ لوگوں کے تحفظ اور لااینڈ آرڈر کو برقرار رکھنے کیلئے پابند عہد ہے ۔ کوئی بھی شخص قانون کے ساتھ کھلواڑ کرے گا ، تو اس کو بخشا نہیں جائے گا ۔

اترپردیش حکومت نے فیصلہ کے پیش نظر اجودھیا سمیت پوری ریاست میں الرٹ جاری کردیا ہے اور سیکورٹی کے انتظامات سخت کردئے ہیں ۔ اجودھیا میں متنازع اراضی کی طرف جانے والے سبھی راستوں کو بند کردیا گیا ہے ۔ ٹیڑھی بازار سے دو پہیہ اور فوروہیلر گاڑیوں کی آمدورفت پر روک لگادی گئی ہے ۔ گہری جانچ کے بعد ہی عقیدتمندوں اور عام لوگوں کو جانے دیا جارہا ہے ۔

Loading...