ایٹہ میں زہریلی شراب پینے سے 17 لوگوں کی موت، 14 بیمار

زہریلی شراب سے آج ہونے والی اموات کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے حکومت نے علی گنج کے ڈپٹی کلکٹر، ضلع آبکاری افسر، آبکاری انسپکٹر اور ڈپٹی پولیس سپرنٹنڈنٹ سمیت 12 کو معطل کر دیا۔

Jul 17, 2016 12:33 AM IST | Updated on: Jul 17, 2016 12:33 AM IST
ایٹہ میں زہریلی شراب پینے سے 17 لوگوں کی موت، 14 بیمار

ایٹہ : اترپردیش میں ضلع ایٹہ کے علی گنج علاقے میں زہریلی شراب پینے سے مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر 17 ہو گئی جبکہ 14 بیمار لوگوں کا علاج سیفئی میڈیکل کالج میں چل رہا ہے۔ حکومت نے اس معاملے میں تین افسران سمیت 12 لوگوں کو معطل کر دیا ہے۔

زہریلی شراب سے آج ہونے والی اموات کو سنجیدگی سے لیتے ہوئے حکومت نے علی گنج کے ڈپٹی کلکٹر، ضلع آبکاری افسر، آبکاری انسپکٹر اور ڈپٹی پولیس سپرنٹنڈنٹ سمیت 12 کو معطل کر دیا۔ چیف سکریٹری دیپک سنگھل نے بتایا کہ ان تینوں افسران کے ساتھ ہی ایک آبکاری انسپکٹر، علی گنج کے تھانہ انچارج اور آبکاری محکمہ کے ایک سپاہی کو بھی معطل کیا گیا ہے۔

انہوں بتایا کہ آبکاری کمشنر اورجوائنٹ کمشنر کو موقع پر پہنچنے کی ہدایات دی گئی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ لاپروائی برداشت نہیں کی جائے گی۔ افسران ذمہ داری سے بچ نہیں سکتے۔

Loading...

Loading...