سونیا گاندھی کی شہہ پر سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم نے کیا ملک مخالف کام: بی جے پی

نئی دہلی۔ عشرت جہاں انکاؤنٹر معاملے میں مرکزی حکومت نے سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم کے خلاف حملہ بولا ہے۔

Apr 18, 2016 07:25 PM IST | Updated on: Apr 18, 2016 07:25 PM IST
سونیا گاندھی کی شہہ پر سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم نے کیا ملک مخالف کام: بی جے پی

نئی دہلی۔ عشرت جہاں انکاؤنٹر معاملے میں مرکزی حکومت نے سابق وزیر داخلہ پی چدمبرم کے خلاف حملہ بولا ہے۔ وزیر مملکت برائے داخلی امور کرن رجیجو نے تو چدمبرم کے کام کو اینٹی نیشنل تک قرار دیا اور کہا کہ سابق وزیر داخلہ نے اپنے عہدے کا غلط استعمال کیا اور اپنی ڈیوٹی ٹھیک سے نہیں ادا کی۔ وہیں وزیر تجارت نرملا سیتا رمن نے بھی پریس کانفرنس کر چدمبرم پر جم کر بھڑاس نکالی اور اس پورے کیس کے لئے کانگریس صدر سونیا گاندھی کو ذمہ دار ٹھہرایا۔

کرن رجیجو نے کہا کہ چدمبرم کے کام کو اینٹی نیشنل کہہ سکتے ہیں۔ ملک کی سلامتی سے وابستہ لوگوں کے لئے ان کا کام حوصلہ پست کرنے والا تھا۔ ملک کے وزیر داخلہ کو ایسا نہیں کرنا چاہئے تھا لیکن اس کام کے لئے ان پر دباؤ رہا ہوگا، نہیں تو ایک دہشت گرد کو وزیر داخلہ کس طرح کلین چٹ دے سکتا ہے۔

Loading...

وہیں وزیر تجارت نرملا سیتا رمن نے کہا کہ عشرت جہاں معاملے میں یہ ثابت ہو گیا ہے کہ سب سے پہلا حلف نامہ بھی چدمبرم نے ہی سائن کیا تھا۔ اس میں کہا گیا تھا کہ عشرت جہاں لشکر کی دہشت گرد تھی اور اس وقت کے وزیر اعلی (نریندر مودی) کو نشانہ بنانے کی اس کی سازش تھی لیکن دوسرے حلف نامہ میں ان باتوں کو ہوشیاری سے الگ کر دیا گیا۔ سیتا رمن نے کہا کہ اس وقت وزیر داخلہ نے مان لیا تھا کہ وہ بی جے پی سے سیاسی جنگ نہیں لڑ سکتے، تو سارے معاملے کو دوسرا رنگ دے دیا گیا کہ ایک معصوم لڑکی کو فرضی انکاؤنٹر میں مار دیا گیا۔ لیکن یہ معاملہ صرف وزیر داخلہ کا نہیں ہے۔ سونیا گاندھی نے اس پر پورا کام کیا ہے۔

Loading...