کام نہیں آیا وزیر اعلی شیوراج کا الرٹ، نیمچ کے بعد اب چھتر پور میں دھماکہ

ریوا : مدھیہ پردیش کے نیمچ میں دھماکہ کے بعد اب چھتر پور میں زبردست دھماکہ ہوا ہے۔ تاہم اس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

Sep 19, 2015 07:42 PM IST | Updated on: Sep 19, 2015 07:42 PM IST
کام نہیں آیا وزیر اعلی شیوراج کا الرٹ، نیمچ کے بعد اب چھتر پور میں دھماکہ

ریوا : مدھیہ پردیش کے نیمچ میں دھماکہ کے بعد اب چھتر پور میں زبردست دھماکہ ہوا ہے۔ تاہم اس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ فی الحال دھماکہ کی وجہ کا پتہ نہیں چل سکا ہے۔ پولیس جائے حادثہ پر پہنچ کر معاملے کی تحقیقات میں مصروف ہو گئی ہے۔

بتایا جا رہا ہے کہ چھتر پور کے شكلانا محلہ کے گوال منگلا علاقے میں تالاب کے کنارے تیز آواز کے ساتھ دھماکہ ہوا، جسے سن کر ارد گرد کے رہنے والے لوگ سہم گئے اور کافی دیر بعد باہر نکلے۔ فورا ہی لوگوں نے اس کی اطلاع پولیس کو دی۔موقع پر پہنچی پولیس نے فی الحال اس معاملے میں کچھ بھی کہنے سے انکار کر دیا ہے۔

عینی شاہدین کے مطابق تالاب کے کنارے میں واقع ایک عارضی جھگی میں یہ دھماکہ ہوا ، جس میں جھگی پوری طرح سے خاکستر ہوگئی ۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ دھماکہ کسی دھماکہ خیز مواد کی وجہ سے ہوا ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ یہاں کنویں کی کھدائی کا کام بھی چل رہا ہے۔ شاید کھدائی کے لئے لائی گئی جلیٹن کی چھڑوں کی وجہ سے یہ دھماکہ ہوا ہے۔ تاہم جائے حادثہ پر پولیس کے اعلی افسران پہنچ گئے ہیں۔ فورینسک اور ایف ایس ایل کی ٹیمیں دھماکے کی تحقیقات میں مصروف ہو گئی ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ مدھیہ پردیش کے نیمچ ضلع میں ہفتے کی صبح ایک مکان میں ہوئے دھماکے میں میاں بیوی کی موت ہو گئی تھی ۔ یہ دھماکہ ضلع ہیڈکوارٹر سے 80 کلومیٹر دور سگولي تھانہ علاقہ کے پپروا ںگاؤں میں ہوا۔ بتایا جا رہا ہے کہ رات کو تقریبا ڈیڑھ بجے ہوئے اس دھماکے میں ایک جوڑے کی موت ہو گئی ۔ مہلوکین کی شناخت ادےرام (35) اور نرمدا بائی (25) کے طور پر ہوئی ہے۔ دھماکہ اتنا زوردار تھا کہ لاش کے ٹکڑے 15 فٹ کی دوری پر بکھرے پڑے تھے۔ دھماکے کی گونج کئی کلومیٹر دور تک سنائی پڑی ۔ ارد گرد کے مکانوں کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

Loading...

خیال رہے کہ گزشتہ روز ہی وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ ریاست کے حکام کو خبردار کیا تھا کہ مجرموں کے خلاف کارروائی میں لاپروائی کسی بھی قیمت پر برداشت نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے دھماکہ خیز مواد کے لائسنسوں کا سروے بھی کرنے کی ہدایت دی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ غفلت کی وجہ سے حادثہ ہونے پر ضلع کلکٹر اور ایس پی جوابدہ ہوں گے۔

Loading...