مدھیہ پردیش : یہاں دلت خاتون سرپنچ کو نہیں لہرانے دیا گیا پرچم

ملک کی آزادی کو 68 سال بھلے ہی ہو گئے ہوں ، لیکن سماج کے کمزور طبقوں کو اصلی آزادی آج تک نہیں مل پائی ہے

Aug 16, 2015 01:15 PM IST | Updated on: Aug 16, 2015 01:16 PM IST
مدھیہ پردیش : یہاں دلت خاتون سرپنچ کو نہیں لہرانے دیا گیا پرچم

بھوپال :  ملک کی آزادی کو 68 سال بھلے ہی ہو گئے ہوں ، لیکن سماج کے کمزور طبقوں کو اصلی آزادی آج تک نہیں مل پائی ہے ۔ صورتحال یہ ہے کہ آج بھی دیہی علاقوں میں دبنگوں کے آگے قانون بھی لاچار ثابت ہو رہا ہے ۔

رائے سین ضلع کے مانگرول گرام پنچایت میں  ایک دلت خاتون سرپنچ پشپا بائی کو اونچی ذات کے نائب سرپنچ کے اہل خانہ نے یوم آزادی کے موقع پرچم ہی نہیں لہرانے دیا ۔ مانگرول گاؤں کی خواتین سرپنچ پشپا اور دلت سکریٹری راجیش كیوٹ جب پرچم لہرانے پہنچے، تو پنچایت کے نائب سرپنچ کے اہل خانہ نے سکریٹری کے ساتھ نہ صرف مارپیٹ کی بلکہ پرچم بھی پھاڑ دیا ۔

انہوں نے بتایا کہ دبنگوں نے سرپنچ اور سکریٹری کو دھمکایا ، جس کے بعد سرپنچ اور سکریٹری جب اس کی شکایت کرنے بریلی تھانے پہنچے تو پولیس افسران نے ان کی شکایت تو درج کر لی ، لیکن شکایت میں سے قومی پرچم کی توہین کی بات ہٹانے کو کہا ۔

متاثرہ سرپنچ اور سکریٹری کا کہنا تھا کہ جب ان کی بریلی میں پولیس حکام نے نہیں سنی ، تو وہ رائے سین میں جوائنٹ ایس پی اور کلکٹر کے پاس فریاد لگانے آئے ہیں ۔ متاثرین نے ضلع ہیڈکوارٹر آ کر حکام سے ملنے کی کوشش کی لیکن کسی بھی افسر نے ان کی بات نہیں سنی۔

Loading...

Loading...