وزیر اعظم مودی کو ایک مسلم خاتون نے بھیجی راکھی، شوہر کے لئے مانگا کارگل شہید کا درجہ

Aug 29, 2015 01:44 PM IST | Updated on: Aug 29, 2015 01:44 PM IST
وزیر اعظم مودی کو ایک مسلم خاتون نے بھیجی راکھی، شوہر کے لئے مانگا کارگل شہید کا درجہ

برہان پور : مدھیہ پردیش کے برہان پور کی ایک خاتون نے وزیر اعظم نریندر مودی کو راکھی بھیجی ہے اور تحفے میں کارگل میں جان قربان کرنے والے اپنے شوہر کوشہید کا درجہ دئے جانے کا مطالبہ کیا ہے ۔

دراصل کارگل جنگ کے دوران شہید ہوئے برہان پور کے محمد صابر کو مرکزی حکومت اور آرمی کی جانب سے تو شہید کا درجہ دیدیا گیا ہے ، لیکن مدھیہ پردیش حکومت انہیں شہید نہیں مان رہی  ہے ۔ اس کو لے کر شہید کی بیوی آمنہ خاتون نے وزیر اعظم نریندر مودی اور ریاست کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان کو ایک خط کے ساتھ راکھی بھیجی ہے اور راکھی کے تحفہ کی شکل میں اپنے شوہر کو شہید کا درجہ دئے جانے کا مطالبہ کیا ہے ۔

شہید کی بیوی آمنہ خاتون اور بچے برسوں سے اپنے حق کے لئے لڑائی لڑ رہے ہیں ۔ ان کا کہنا ہے کہ لانس نائک محمد صابر کارگل جنگ کے دوران شہید ہو گئے تھے ۔ اس وقت کے وزیر دفاع جارج فرنانڈیز اور آرمی نے بھی خط بھیج کر صابر کو شہید اعلان کیا تھا۔

آمنہ خاتون کا کہنا ہے کہ مرکزی حکومت اور آرمی کی طرف سے شوہر کو شہید کا درجہ دئے جانے کے بعد بھی ریاستی حکومت کے یکم مئی 2003 کو بھیجے گئے خط میں بتایا گیا ہے کہ صابر کی موت ڈیوٹی کے دوران خود کی بندوق سے گولی لگنے کی وجہ سے ہوئی ۔ اسی کے پیش نظر مدھیہ پردیش حکومت نے انہیں مالی مدد دینے سے بھی انکار کر دیا۔

Loading...

شہید کے اہل خانہ کی جانب سے لکھنؤ کے آرمڈ فورسز ٹریبونل نے بھی حکومت ہند اور آرمی کے ذمہ دار افسروں سے جواب طلب کیا ہے۔

Loading...
Listen to the latest songs, only on JioSaavn.com