مدھیہ پردیش : اسمبلی کے باہر کانگریسی ممبران اسمبلی کی پٹائی، كٹارے کی پسلی ٹوٹی

بھوپال: مدھیہ پردیش اسمبلی کے مانسون اجلاس کے دوسرے دن اسمبلی میں کانگریسی اور بی جے پی ممبر اسمبلی میں جم کر گھمسان مچ گیا ۔

Jul 21, 2015 05:30 PM IST | Updated on: Jul 21, 2015 09:30 PM IST
مدھیہ پردیش : اسمبلی کے باہر کانگریسی ممبران اسمبلی کی پٹائی، كٹارے کی پسلی ٹوٹی

بھوپال: مدھیہ پردیش اسمبلی کے لئے منگل کا دن سیاہ دن ثابت ہوا ۔  وياپم اور ڈيمیٹ معاملے پر اسمبلی میں ہنگامے کے بعد بی جے پی ممبران اسمبلی نے ایوان کے باہر کانگریسی ممبران اسمبلی کی پٹائی کر دی ۔ دونوں پارٹیوں کے درمیان اس ٹکراؤ میں اپوزیشن لیڈر ستيہ دیو كٹارے زخمی ہو گئے اور ان کی پسلی میں فریکچر آ گیا ۔ اور انہیں اسپتال میں داخل کیا گیا ہے جبکہ ادھر  اسپکر نے معاملے کی جانچ کی بات کہی ہے ۔

مانسون اجلاس کے دوسرے دن کارروائی شروع ہوتے ہی کانگریس کے  رکن اسمبلی وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان کے استعفی کی مانگ کو لے کر نعرے بازی کرنے لگے ۔  نعرے بازی کی وجہ سے دو بار ایوان کی کارروائی ملتوی کرنی پڑی ۔  تیسری بار کارروائی شروع ہوتے ہی ہنگامہ ہونے کے بعد اسپیکر نے ضروری کام کاج نمٹا کر ایوان کو بدھ تک کے لئے ملتوی کر دیا ۔

اسی کے بعد ایوان کے باہر نعرے بازی کر رہے کانگریس کے اراکین اسمبلی سے بی جے پی  کے ممبران اسمبلی بھڑ گئے ۔  کانگریس کے ممبر اسمبلی سندر لال تیواری نے بی جے پی  کے ممبران اسمبلی پر مار پیٹ کا الزام لگایا ہے۔  ایسا ہی الزام کئی دیگر کانگریسی ممبران اسمبلی نے بھی  لگائے ہیں ۔

اس دوران دھكامكي میں اپوزیشن لیڈر ستيہ دیو كٹارے سمیت کئی اراکین اسمبلی زمین پر گر گئے ۔  كٹارے کا الزام ہے کہ مارپیٹ اور دھكامكي کی وجہ سے ان کی پسلیوں میں چوٹ لگی ہے ۔  اسی کے بعد كٹارے کو اسمبلی سے ایمبولینس سے پرائیویٹ ہسپتال لے جایا گیا ۔

Loading...

اسمبلی کے اسپیکر  سيتاسرن شرما نے کہا کہ یہ واقعہ واقعی سنجیدہ ہے اور انہوں نے اس پورے معاملے کی جانچ کرنے کی بات بھی کہی ۔  تاہم  انہوں نے کہا کہ کانگریس کے ممبران اسمبلی نے مارپیٹ کے بجائے دھكامكي کئے جانے کی شکایت کی ہے ۔

Loading...