سڑک پر دھرنا اور احتجاج کے خلاف ہائی کورٹ کا سخت موقف

مدھیہ پردیش ہائی کورٹ نے سڑکوں پر دھرنا، احتجاج و مظاہرہ اور عوامی جلسے کرنے کے معاملے میں سخت موقف اپناتے ہوئے ضلع انتظامیہ کو اس کی اطلاع ملتے ہی فوری کارروائی کرنے کا حکم دیا ہے ۔

Jul 02, 2015 05:26 PM IST | Updated on: Jul 02, 2015 05:26 PM IST
سڑک پر دھرنا اور احتجاج کے خلاف ہائی کورٹ کا سخت موقف

مدھیہ پردیش ہائی کورٹ نے سڑکوں پر دھرنا، احتجاج و مظاہرہ اور عوامی جلسے کرنے کے معاملے میں سخت موقف اپناتے ہوئے ضلع انتظامیہ کو اس کی اطلاع ملتے ہی فوری کارروائی کرنے کا حکم دیا ہے ۔ جسٹس راجندر مینن اور جسٹس ایس سی گپتا پر مشتمل دو رکنی بنچ نے اس معاملے میں سخت موقف اپناتے ہوئے ڈسٹرکٹ کلکٹر اور پولیس سپرنٹنڈنٹ کو یہ ہدایت دی ہے کہ اس طرح سڑک پر رخنہ ڈالنے کی اطلاع ملتے ہی وہ کارروائی کریں۔ سڑکوں سے فوراً لوگوں کو ہٹائیں اور ان کے خلاف ضروری کارروائی کریں۔ ستنا بلڈنگ کے باشندہ ستیش ورما کی طرف سے داخل کردہ درخواست میں کہا گیا تھا کہ ہائی کورٹ نے سڑکوں پر دھرنا، مظاہرہ ، عوامی جلسہ سمیت ایسے دیگر پروگراموں پر پابندی لگا رکھی ہے جس سے ٹریفک میں رخنہ پڑتا ہے۔ عدالت نے اپنے حکم میں یہ واضح طور پر کہا ہے کہ سڑکیں لوگوں کے چلنے پھرنے کے لئے ہیں۔ اس کے باوجود گذشتہ گیارہ جون کو سیوک سنٹر میں سڑک پر جلسہ کیا گیا۔ درخواست دہندہ نے سڑک پر ہوئے جلسے کی تصویریں بھی عدالت کے سامنے پیش کیں۔ درخواست کی سماعت کے بعد بنچ نے یہ حکم جاری کرتے ہوئے اس معاملے کی اگلی سماعت کے لئے تین اگست کی تاریخ مقرر کی ہے۔ درخواست دہندہ نے سماعت کے دوران اپنا موقف خود پیش کیا۔

Loading...

Loading...