پوسٹ مارٹم رپورٹ: صحافی اکشے سنگھ کے جسم پر نہیں ملے چوٹ کے نشان

وياپم گھوٹالے کی کوریج کرنے کے لئے مدھیہ پردیش گئے ٹی وی صحافی اکشے سنگھ کی موت کے معاملے میں پوسٹ مارٹم رپورٹ آگئی ہے۔ اس رپورٹ کے مطابق ان کے جسم پر اندرونی یا بیرونی چوٹ کا کوئی نشان نہیں ملاہے۔

Jul 07, 2015 01:57 PM IST | Updated on: Jul 07, 2015 01:57 PM IST
پوسٹ مارٹم رپورٹ: صحافی اکشے سنگھ کے جسم پر نہیں ملے چوٹ کے نشان

وياپم گھوٹالے کی کوریج کرنے کے لئے مدھیہ پردیش گئے ٹی وی صحافی اکشے سنگھ کی موت کے معاملے میں پوسٹ مارٹم رپورٹ آگئی ہے۔ اس رپورٹ کے مطابق ان کے جسم پر اندرونی یا بیرونی چوٹ کا کوئی نشان نہیں ملاہے۔جبکہ پوسٹ مارٹم کرنے والے ڈاکٹروں کی ٹیم نے موت کی موت کی وجوہات کو لے کر اپنی رائے ابھی نہیں بتائی ہے۔

ایس پی عابد خان نے کہا ہے کہ گجرات کے داهود واقع ہسپتال سے ملی اکشے کی پوسٹ مارٹم رپورٹ میں کوئی اندرونی یا بیرونی چوٹ نہیں پائی گئی ہے، جبکہ اس کی موت کی وجہ کو لے کر پوسٹ مارٹم کرنے والے ڈاکٹروں کی ٹیم نے اپنا اوپینین ریزرو رکھا ہے ۔ایک سینئر پولیس افسر نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر اس بات کی تصدیق کی ہے کہ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں اکشے کے دل کا سائز بڑھا ہوا پایا گیا ہے، لیکن ڈاکٹروں نے ان کی موت کی وجوہات پر 'اوپینین ریزرو' رکھنے کو لے کر کچھ کہنے سے انکار کیا ہے اور وسرا کی جانچ رپورٹ کا انتظار کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

خان نے کہا کہ'ہسپتال میں اکشے کا وسرا لیاگیا ہے اور اسے ایمس دہلی کو جانچ کے لئے بھیجنے کی کارروائی شروع کر دی گئی ہے۔ پولیس نے تحقیقات کے لئے ضلع کے میگھنگر تھانے میں کیس درج کیا ہے۔ جھابوا سے ایک پولیس ٹیم دہلی گئی ہے، جو اکشے کے ساتھ کیمرہ مین یا جو بھی دیگر تھے، ان کے بیانات بھی لے گی۔ آپ کو بتا دیں کہ نیوز چینل آج تک سے وابستہ صحافی اکشے سنگھ کی گزشتہ ہفتہ جھابوا ضلع کے میگھنگر میں اچانک پراسرار طریقے سے موت ہو گئی تھی۔

Loading...

Loading...