ویاپم کے شور میں خود گم ہوا ویاپم

ویاپم گھوٹالے سے متعلق کئی سوال پوچھے جانے تھے لیکن اسی مسئلے پر اپوزیشن کے زبردست ہنگامے کی وجہ سے وقفۂ سوال ہی نہیں ہوسکا۔

Jul 21, 2015 06:01 PM IST | Updated on: Jul 21, 2015 06:01 PM IST
ویاپم کے شور میں خود گم ہوا ویاپم

 مدھیہ پردیش اسمبلی کے دوسرے دن آج وقفۂ سوال کے دوران ریاست کے سرخیوں میں رہنے والے ویاپم گھوٹالے سے متعلق کئی سوال پوچھے جانے تھے لیکن اسی مسئلے پر اپوزیشن کے زبردست ہنگامے کی وجہ سے وقفۂ سوال ہی نہیں ہوسکا۔ خاص بات یہ ہے کہ ویاپم سے متعلق یہ دونوں سوال بھی کانگریس کے ممبران اسمبلی کو ہی پوچھنے تھے لیکن یہ سوال انہی ممبران اسمبلی کے ہنگامے کی وجہ سے دب گئے۔ آج ایوان کی کارروائی کے دوران اسمبلی اسپیکر ڈاکٹر سیتا سرن شرما پورے وقت اپوزیشن اراکین سے انہی کے سوالوں کا حوالہ دیتے ہوئے ہنگامہ روکنے کی اپیل کرتے ہوئے دیکھاگیا لیکن اپوزیشن کا ہنگامہ بدستور جاری رہا۔ وقفۂ سوال کے دوران آج کانگریس کے ممبر اسمبلی رام نواس راوت کو ویاپم میں فرضی تقرریوں کی انکوائری کے بارے میں ایک سوال پوچھنا تھا۔ مسٹر راوت کو تکنیکی ایجوکیشن کے وزیر سے یہ پوچھنا تھا کہ کیا یہ صحیح ہے کہ وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان نے خفیہ برانچ اندور کو 20 جون 2013 کو پی ایم ٹی کے امتحان میں فرضی طلبا کے بیٹھنے کے بارے میں گمنام خط ملنے کا گزشتہ برس دو جولائی کو ایوان میں اعتراف کیاتھا۔ اس کے ساتھ ہی مسٹر راوت نے 2007 سے دسمبر 2012 کے درمیان میڈیکل ایجوکیشن کا محکمہ وزیر اعلیٰ کے پاس ہی ہونے کے بارے میں بھی بتانے کا مطالبہ کیاتھا۔ 
Loading...

 

Loading...