உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    75th independent day: سرینگر کے لال چوک پر گونجا، وندے ماترم، جوش میں نظر آئے لوگ

    کشمیر سے کنیا کماری تک گزشتہ تین دنوں سے ملک کے کونے کونے میں ترنگا یاترا منائی جارہی ہے۔ لیکن آج کشمیر میں سری نگر کے لال چوک پر نوجوانوں نے جس جوش اور خروش سے ترنگا لہرایا اس نے ہر ہندوستانی کا سینہ فخر سے پھولا ہوا ہے۔

    کشمیر سے کنیا کماری تک گزشتہ تین دنوں سے ملک کے کونے کونے میں ترنگا یاترا منائی جارہی ہے۔ لیکن آج کشمیر میں سری نگر کے لال چوک پر نوجوانوں نے جس جوش اور خروش سے ترنگا لہرایا اس نے ہر ہندوستانی کا سینہ فخر سے پھولا ہوا ہے۔

    کشمیر سے کنیا کماری تک گزشتہ تین دنوں سے ملک کے کونے کونے میں ترنگا یاترا منائی جارہی ہے۔ لیکن آج کشمیر میں سری نگر کے لال چوک پر نوجوانوں نے جس جوش اور خروش سے ترنگا لہرایا اس نے ہر ہندوستانی کا سینہ فخر سے پھولا ہوا ہے۔

    • Share this:
      ملک آزادی کا امرت کا تہوار منا رہا ہے۔ کشمیر سے کنیا کماری تک گزشتہ تین دنوں سے ملک کے کونے کونے میں ترنگا یاترا منائی جارہی ہے۔ لیکن آج کشمیر میں سری نگر کے لال چوک پر نوجوانوں نے جس جوش اور خروش سے ترنگا لہرایا اس نے ہر ہندوستانی کا سینہ فخر سے پھولا ہوا ہے۔ دراصل سری نگر میں ترنگا لہرانا ایک چیلنجنگ رہا ہے۔ لیکن اس بار کشمیری عوام نے ملک کے غرور اور فخر کے ساتھ دہشت گردوں کو منہ توڑ جواب دیا ہے۔ آزادی کی 75 ویں سالگرہ کے موقع پر کچھ نوجوانوں نے لال چوک میں آکر ترنگا لہرایا اور بھارت ماتا کی جئے اور وندے ماترم کے نعرے لگائے۔

      ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک شخص اپنے جسم کو ترنگے میں پینٹ کرتے ہوئے اور ہاتھوں میں ترنگا لہرا رہا ہے۔ وہ جوش و خروش سے وندے ماترم اور بھارت ماتا کی جئے کا نعرہ لگا رہے ہیں اور ان کے پیچھے دوسرے لوگ بھی یہ نعرے دہرا رہے ہیں۔ ان گروپوں میں تمام کمیونٹیز کے لوگ نظر آتے ہیں۔ پچھلے کچھ سالوں سے لال چوک پر ترنگا لہرانا ایک عام سی بات بن گئی ہے، جو پہلے چیلنج تھا۔ کچھ دن پہلے سری نگر کے لال چوک تک ترنگا یاترا نکالی گئی۔ جس کی وجہ سے پورا لال چوک ترنگے سے ڈھکا ہوا نظر آیا۔



      چنئی ایئرپورٹ پر پکڑا گیا بینکاک کا مسافر، جانچ کی تو ملا کچھ ایسا افسران کے اڑ گئے ہوش

      75th Independence Day: کرنال میں مدرسے کے چھوٹے بچوں نے نکالی ترنگا یاترا، خوبصورت نظارہ

      اس ریلی کی قیادت بھارتیہ جنتا یوا مورچہ کے صدر تیجسوی سوریا نے کی۔ یہ ریلی تاریخی لال چوک سے شروع ہو کر کارگل وار میموریل تک نکالی گئی۔ ریلی کے بعد تیجسوی سوریا نے ٹویٹ کیا، ’’کچھ سال پہلے تک لال چوک ملک مخالف اور علیحدگی پسند جذبات سے بھرا ہوا تھا۔ دہشت گردوں نے ترنگا لہرانے کی ہمت کرنے والوں کو جان سے مارنے کی دھمکی دی تھی۔ 1992 میں نریندر مودی جی نے فخر کے ساتھ یہاں ترنگا لہرایا تھا جس کی وجہ سے بھارتیہ جنتا یوا مورچہ 30 سال بعد اسے دوبارہ لہرانے میں کامیاب ہوا ہے۔
      Published by:Sana Naeem
      First published: