شتروگھن سنہا بی جے پی کو کہہ سکتے ہیں الوداع، دیر رات نتیش کمار سے کی ملاقات

پٹنہ : بہار کے سیاسی گلیارے میں ایک بڑی تبدیلی ہونے کا اشارہ مل رہاہے ۔

Jul 25, 2015 11:30 PM IST | Updated on: Jul 25, 2015 11:31 PM IST
شتروگھن سنہا بی جے پی کو کہہ سکتے ہیں الوداع، دیر رات نتیش کمار سے کی ملاقات

پٹنہ :  بہار کے سیاسی گلیارے میں ایک بڑی تبدیلی ہونے کا اشارہ مل رہاہے ۔ فلم اداکار سے سیاستداں بنے  بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ شتروگھن سنہا پارٹی چھوڑ سکتے ہیں ۔ یہ قیاس آرائی اس سے کی  جا رہی ہے کہ شتروگھن نے ہفتہ  کو جہاں ای ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے نتیش کمار کی جم کر تعریف کی اور پھر دیر رات خفیہ طور پر وزیر اعلی نتیش کمار سے اکیلے میں ملاقات کی ۔

شتروگھن سنہا نے مظفر پور ریلی میں وزیر اعظم نریندر مودی کی جانب سے نتیش کمار پر کئے گئے حملے کی مذمت کی ،  انہوں نے کہا کہ ابھی بہار میں انتخابات کا اعلان نہیں ہوا ہے، ایسے میں وزیر اعظم کو الزام تراشیوں کی سیاست نہیں کرنی چاہئے ، وزیر اعظم کو نتیش کی برائی نہیں کرنی چاہئے تھی ۔ شتروگھن یہیں نہیں رکے، انہوں نے کہا کہ نتیش کمار کی وکا پرش ہیں ، لہذا وہ نہیں چاہتے ہیں کہ بہار میں ترقی کی رفتار رکے ۔

شتروگھن سنہا ہفتہ دیر رات وزیر اعلی نتیش کمار سے ملنے ان کے گھر بھی پہنچے ، کیمرے کو دیکھ کر وہ کچھ بولنے کی بجائے نظریں چراتے نظر آئے ۔ بہاری بابو کے نام سے مشہور شتروگھن کے کچھ قریبی لوگوں نے بھی ان کے بی جے پی چھوڑنے کی قیاس آرائی پر حامی بھری ہے ۔

قابل ذکر ہے کہ شتروگھن سنہا طویل عرصے سے بی جے پی میں ہیں ۔ وہ اٹل بہاری واجپئی کی حکومت میں جہاز راني اور صحت جیسی اہم وزارت کا حصہ رہ چکے ہیں ۔  اس کے علاوہ نتیش کمار بھی کہہ چکے ہیں کہ بی جے پی شتروگھن سنہا کا استعمال صرف ووٹ حاصل کرنے کیلئے کرتی رہی ہے ۔

Loading...

شتروگھن سنہا  2010 سے ہی نریندر مودی کو قومی سیاست میں آنے سے روکنے کی بات کرتے رہے ہیں ،  گزشتہ دنوں بی جے پی کے یوم تاسیس پر بھی بہار میں منعقد پروگرام میں انہیں مدعو نہیں کیا گیا تھا ، تاہم ہفتہ کو جب وزیر اعظم پٹنہ میں موجود تھے تو شتروگھن سنہا بھی ان کے ساتھ  اسٹیج پر موجود تھے ۔

Loading...