بھینس چوروں کے بعد اب بکری کے قاتلوں کی گرفتاری کیلئے خاک چھان رہی ہے یوپی پولیس

میرٹھ : اتر پردیش کے باغپت بنولی تھانہ علاقہ کے انگد پور گاؤں کی رہنے والی خاتون نے اپنے گاؤں کے پانچ افراد کے خلاف بکری کا پیٹ پیٹ کر قتل کرنے کا کیس درج کروایا ہے۔ قتل کا یہ کیس جانوروں پر ظلم سے متعلق دفعات کے تحت درج کیا گیا ہے۔

Dec 11, 2015 02:13 PM IST | Updated on: Dec 11, 2015 02:17 PM IST
بھینس چوروں کے بعد اب بکری کے قاتلوں کی گرفتاری کیلئے خاک چھان رہی ہے یوپی پولیس

میرٹھ : اتر پردیش کے باغپت بنولی تھانہ علاقہ کے انگد پور گاؤں کی رہنے والی خاتون نے اپنے گاؤں کے پانچ افراد کے خلاف بکری کا پیٹ پیٹ کر قتل کرنے کا کیس درج کروایا ہے۔ قتل کا یہ کیس جانوروں پر ظلم سے متعلق دفعات کے تحت درج کیا گیا ہے۔

بکری کی مالکن رخسانہ کی شکایت پر بنولي تھانہ پولیس نے پانچ افراد کے خلاف معاملہ درج کیا ہے اور اب ملزموں کی گرفتاری کے لئے پولیس خاک چھان رہی ہے۔

ریجنل سی او این پی سنگھ سے جب پورے معاملے پر بات کی گئی تو ان کا کہنا تھا کہ کیس درج تو کر لیا گیا ہے، لیکن بکری کی موت کے بارے میں تحقیقات کے بعد ہی کچھ کہنا ممکن ہوگا ۔ معاملے کی جانچ کی جا رہی ہے اور اس کے بعد ہی پورے واقعہ سے پردہ اٹھ پائے گا۔ فی الحال وہ میڈیا کے سوالات سے بچنے کے لئے خواہ کچھ بھی دلیلیں پیش کر رہے ہوں، لیکن حقیقت یہی ہے کہ ضلع کی بنولي پولیس نے بکری کے قتل میں پانچ افراد کو نامزد کر لیا ہے۔

خواتین کا الزام ہے کہ بدھ کی رات اس کی بکری کہیں گم ہو گئی تھی ، جس کی تلاش کرتے ہوئے وہ لوگ جنگل کی طرف گئے تو انہوں نے دیکھا کہ تین لوگ بکری کو باندھ کر بری طرح پیٹ رہے تھے۔ اس کی وجہ سے بکری کی موت ہو گئی۔ اسی کی بنیاد پر خاتون نے بکری اٹھا کر لے جانے اور پٹائی کرنے والے پانچ افراد پر قتل کا مقدمہ درج کرایا ہے۔

Loading...

بتایا جا رہا ہے کہ اگر پانچوں ملزمان پر بکری کے قتل کا الزام ثابت ہو جاتا ہے تو ان کے خلاف جانوروں پر ظلم ایکٹ کے تحت کارروائی کی جائے گی۔ اس ایکٹ کے تحت اگر کوئی شخص کسی جانور کا قتل کرتا ہے تو اسے پانچ سال کی سزا اور 20 ہزار روپے جرمانے  کا بندو بست ہے۔

Loading...