مدھیہ پردیش : قبائلی علاقے کا خوفناک سچ ، آلودہ پانی سے بیمار بچوں کا گرم سریا داغ کرکیا گیا علاج

مدھیہ پردیش میں قبائلی اکثریتی ضلع منڈلا میں آلودہ پانی پینے سے لوگ جان لیوا بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں

Aug 12, 2015 12:13 AM IST | Updated on: Aug 12, 2015 12:13 AM IST
مدھیہ پردیش : قبائلی علاقے کا خوفناک سچ ، آلودہ پانی  سے بیمار بچوں کا گرم سریا داغ کرکیا گیا علاج

منڈلا :  مدھیہ پردیش میں قبائلی اکثریتی ضلع منڈلا میں آلودہ پانی پینے سے لوگ جان لیوا بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں ۔ آلودہ پانی پینے سے ایک ہفتے کے اندر اندر ایک چھ سالہ بچی کی موت ہو گئی ہے، جبکہ ایک دوسرے بچے کی حالت نازک ہے ۔ چونکانے والی بات ہے کہ بڑی تعداد میں بچوں اور بڑوں کے بیمار ہونے کے باوجود دیہی باشندے علاج کرانے کی بجائے جھاڑپھونك کا سہارا لے رہے ہیں ۔ علاج کے نام پر بچوں کو گرم سریا سے اسے داغا جا رہا ہے ۔

منڈلا ضلع کے انجنيا علاقے کے تحت مانك پور گاوں  میں آلودہ پانی پینے کی وجہ سے لوگ جان لیوا بیماریوں کا شکار ہو رہے ہیں ۔ وہیں دیہی باشندے علاج کرانے کی بجائے جھاڑپھونك کا سہارا لے رہے ہیں ۔ بیگا قبائلی اکثریتی مانك پور گاؤں کے ایک محلے میں نالے اور گندے كے کا آلودہ پانی پینے کی وجہ سے ہفتہ کو چھ سالہ لڑکی نے دم توڑ دیا تو ایک 12 سالہ لڑکے کی حالت نازک ہے ۔

حیرت کی بات تو یہ ہے کہ علاج کرانے کی بجائے بیماروں پر جھاڑپھونك کرکے  تشدد کیا جا رہا ہے ۔ بیماروں کا گرم سریا داغ كر علاج کیا جا رہا ہے ۔

بیماری کی وجہ سے حال ہی میں دم توڑنے والی چھ سال کی لڑکی کے والد نے بتایا کہ بھلوا نامی جنگلی پھل گرم تیل ماتھے پر لگانے سے بیماری اور درد دور ہو جاتے ہیں ۔ اس لئے اس نے اپنی بیمار بیٹی کے ماتھے پر گرم تیل لگا دیا ہے ۔ اتنا ہی نہیں مرنے والی لڑکی کے والد علاج نہیں کرانے کی وجہ مالی تنگی بتا رہے ہیں ۔ طبی مرکز انجنيا کے ڈاکٹر جمنا چيچام کی مانیں تو اسپتال میں لڑکی کی موت ہو جانے کی وجہ سے وہ خاندان اسپتال آنے سے کترا رہا ہے ۔

Loading...

Loading...