உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    ہندوستان نے نائب صدر وینکیا نائیڈو کے اروناچل پردیش دورہ پر چین کے اعتراض کو کیا خارج

    ہندوستان نے نائب صدر وینکیا نائیڈو کے اروناچل پردیش دورہ پر چین کے اعتراض کو کیا خارج ۔ فائل فوٹو ۔

    ہندوستان نے نائب صدر وینکیا نائیڈو کے اروناچل پردیش دورہ پر چین کے اعتراض کو کیا خارج ۔ فائل فوٹو ۔

    ہندوستان نے نائب صدر جمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو کے اروناچل پردیش کے دورہ پر چین کے اعتراض کو بدھ کو سرے سے خارج کردیا اور کہاکہ اروناچل پردیش ہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : ہندوستان نے نائب صدر جمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو کے اروناچل پردیش کے دورہ پر چین کے اعتراض کو بدھ کو سرے سے خارج کردیا اور کہاکہ اروناچل پردیش ہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے ۔ وزارت خارجہ کے ترجمان ارندم باگچی نے کہا کہ ہندوستانی لیڈروں کے ذریعہ ہندوستان کی کسی ریاست کے دورہ پر اعتراض کرنے کی کوئی وجہ نہیں ہے ۔ باگچی نے کہا کہ ہم نے چین کے آفیشیل ترجمان کے تبصرہ کو آج دیکھا ہے ، ہم ایسے بیانات کو خارج کرتے ہیں ۔ اروناچل پردیش ہندوستان کا اٹوٹ حصہ ہے ۔

      وزارت خارجہ کے ترجمان نے نائب صدر جمہوریہ ایم وینکیا نائیڈو کے اروناچل پردیش دورے پر چین کی وزارت خارجہ کے اعتراض کے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں یہ بات کہی ۔ باگچی نے کہا کہ ہندوستانی لیڈران مستقل طور پر اروناچل پردیش کا دورہ کرتے ہیں ، جس طرح وہ ہندوستان کی دیگر ریاستوں میں جاتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی ایک ریاست میں ہندوستانی لیڈروں کے ذریعہ دورہ پر اعتراض کرنے کی کوئی وجہ ہندوستانیوں کو سمجھ نہیں آرہی ہے ۔

      چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان نے بیجنگ میں ایک میڈیا بریفنگ میں نائیڈو کے اروناچل پردیش کے حالیہ دورہ کو لے کر پوچھے گئے ایک سوال پر کہا تھا کہ چین نے کبھی ریاست کو تسلیم نہیں کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سرحدی معاملات پر چین کا موقف واضح ہے ۔ چین کی سرکار نے کبھی بھی ہندوستانی فریق کے ذریعہ یکطرفہ اور غیر قانونی طور پر قائم کئے گئے مبینہ اروناچل پردیش کو منظوری نہیں دی ہے اور وہ ہندوستانی فوج کے متعلقہ خطہ کے دورے کی سخت مخالفت کرتا ہے ۔

      بتادیں کہ چین ہندوستانی لیڈروں کے اروناچل پردیش دورہ پر اعتراض ظاہر کرتا ہے ۔ چین اروناچل پردیش کو جنوبی تبت کا حصہ بتاتا ہے ۔ دونوں فریقوں کی جانب سے یہ تبصرہ مشرقی لداخ میں 17 مہینے سے ہندوستان اور چین کے درمیان جاری اختلافات کو دور کرنے کیلئے ہندوستان اور چین کے درمیان تیرہویں دور کے فوجی مذاکرات کے تین دن بعد آیا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: