உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پیار میں پاگل نابالغ لڑکیاں کررہی ہیں ایسی حرکتیں ، پولیس بھی ہوئی پریشان

    پیار میں پاگل نابالغ لڑکیاں کررہی ہیں ایسی حرکتیں ، پولیس بھی ہوئی پریشان

    پیار میں پاگل نابالغ لڑکیاں کررہی ہیں ایسی حرکتیں ، پولیس بھی ہوئی پریشان

    مارچ میں لاک ڈاون شروع ہونے کے ایک ماہ بعد شہر کے کئی تھانوں میں نابالغ لڑکیوں سے وابستہ ایسی شکایتیں آئیں ، جن کو سن کر تھانہ پولیس بھی حیران رہ گئی ۔

    • Share this:
      مدھیہ پردیش میں بھوپال پولیس (Bhopal police)  کورونا بحران کے چیلنج کے ساتھ ایک عجب پریشانی میں بھی مبتلا ہے ۔ وہ پیار میں پاگل نابالغ لڑکیوں (minor girls) سے پریشان ہے ۔ جی نہیں ، یہ لڑکیاں پولیس کے پیار میں پاگل نہیں ہیں بلکہ یہ اپنے عاشقوں کےساتھ جانے کی ضد پر اڑی ہوئی ہیں اور خودکشی (suicide) کی دھمکیاں دے رہی ہیں ۔

      کورونا کے دور میں کڑی ڈیوٹی کرنے والی راجدھانی پھوپال کی پولیس اب ان نابالغ لڑکیوں سے پریشان ہے جو پیار میں پاگل ہیں ۔ وہ اپنے عاشقوں سے ملاقات نہیں کرپانے پر اپنے اہل خانہ کو خودکشی کرنے کی دھمکیاں دے رہی ہیں ۔ دو معاملات میں تو لڑکیوں نے خودکشی کرلی بھی ہے ۔ لاک ڈاون کی وجہ سے ان لڑکیوں کی اپنے عاشقوں سے ملاقات نہیں ہوپارہی ہے ۔ اس دوران اہل خانہ کو ان کے معاشقہ کی خبر ہوگئی ۔ اہل خانہ نے انہیں سمجھانے کی کوشش کی ، لیکن لڑکیاں اپنے عاشق سے ملنے اور ان سے شادی کرنے کی بات پر بضد ہوگئی ہیں ۔

      پریشان ہوکر کنبہ نے پولیس کی مدد لی ہے ۔ جب یہ شکایت پولیس کے پاس پہنچی تو پولیس حیران رہ گئی ۔ پولیس نے چائلڈ لائن کی مدد سے لڑکیوں کی کاونسلنگ کرائی ۔ جب لڑکوں کو پولیس نے سمجھایا اور قانونی عمل کے بارے بتایا تو انہوں نے پولیس کی بات مان لی ، لیکن ابھی بھی کئی لڑکیاں ایسی ہیں جو کاونسلنگ کے بعد بھی ماننے کیلئے تیار نہیں ہیں ۔ وہ صرف ایک ہی ضد پر اڑی ہوئی ہیں کہ وہ اپنے عاشق کے ساتھ رہنا چاہتی ہیں اور شادی کرنا چاہتی ہیں ۔

      مارچ میں لاک ڈاون شروع ہونے کے ایک ماہ بعد شہر کے کئی تھانوں میں نابالغ لڑکیوں سے وابستہ ایسی شکایتیں آئیں ، جن کو سن کر تھانہ پولیس بھی حیران رہ گئی ۔ شکایتیں کم نہیں ہوئیں اور لاک ڈاون کھلنے کے بعد بھی بڑھتی چلی گئیں تو پولیس نے اپنی سطح پر کچھ شکایتوں کا نمٹارہ کردیا ، لیکن ایک مہینے میں پندرہ ایسی شکایتیں آئیں ، جن کیلئے پولیس کو چائلڈ لائن کی مدد لینی پڑگئی ۔

      چائلڈ لائن بھوپال کی ڈائریکٹر ارچنا سہائے نے بتایا کہ ان کے پاس شہر کے الگ الگ تھانوں سے ایک مہینے میں پندرہ ایسی شکایتیں آئی ہیں ، جن میں نابالغ لڑکیوں کی کاونسنگ مسلسل کی جارہی ہے ۔ ان کا کہنا ہے کہ ان لڑکیوں سے اہل خانہ پریشان ہیں ۔ کاونسلنگ کے بعد بھی کئی لڑکیاں ماننے کیلئے تیار نہیں ہیں ، لیکن ہماری کاونسلنگ ٹیم مسلسل انہیں سمجھانے کی کوشش کررہی ہیں ۔ ارچنا سہائے نے بتایا کہ یہ شکایت لاک ڈاون کے بعد ان لاک شروع ہونے کے دوران بھی کم نہیں ہو رہی ہیں ۔

      معاشقہ کی ایسے کھلی پول

      ارچنا سہائے نے بتایا کہ لاک ڈاون کے دوران جن نابالغ لڑکیوں کا معاشقہ چل رہا تھا ، وہ لاک ڈاون کی وجہ سے اپنے عاشق سے نہیں مل پائیں ۔ جب انہوں نے فون پر طویل بات چیت شروع کی تو اہل خانہ کو اس کی بھنک لگ گئی ۔ اہل خانہ نے جب ان سے موبائل فون لے کر اپنے پاس رکھ لئے تو یہ لڑکیاں کھل کر سامنے آگئیں اور خودکشی کرنے کی دھمکی دینے لگیں ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: