امبیکاسونی کے پنجاب کانگریس کا صدر بننے کاقوی امکان

چنڈی گڑھ : پنجاب کانگریس کی قیادت میں تبدیلی کے پرزور مطالبے اورآئندہ 2017کے اسمبلی انتخابات اور کئی گروپوں میں تقسیم پارٹی میں نئی جان ڈالنے کے مقصد سے اعلی کمال کو بالآخر صدر تبدیل کرنے کا فیصلہ کرناپر پڑا۔

Sep 03, 2015 08:12 PM IST | Updated on: Sep 03, 2015 08:13 PM IST
امبیکاسونی کے پنجاب کانگریس کا صدر بننے کاقوی امکان

چنڈی گڑھ : پنجاب کانگریس کی قیادت میں تبدیلی کے پرزور مطالبے اورآئندہ 2017کے اسمبلی انتخابات اور کئی گروپوں میں تقسیم پارٹی میں نئی جان ڈالنے کے مقصد سے اعلی کمال کو بالآخر صدر تبدیل کرنے کا فیصلہ کرناپر پڑا۔ ریاستی صدر کی دوڑ میں سابق مرکزی وزیر امبیکاسونی کا نام سے اوپر ہے۔

حالاں کہ ریاستی سطح پر سنیل جاکھڑ سمیت کچھ لیڈروں کا کام بھی لیا جارہا ہے۔اعلی کمان طویل عرصے سے جاری گروہ بندی کو ختم کرنے کے لئے کانگریس صدرپرتاپ سنگھ باجوا اور ان کے سخت مخالف سابق وزیر اعلی کیپٹن امرندرسنگھ گروپ میں توازن برقرار رکھنے کے لئے ایسے کئی لیڈر کو یہ عہدہ دینا چاہتی ہے جو کانگریس کومتحد کرکے اکالی۔بی جے پی اتحاد کو انتخابات میں ٹکر دے سکے۔

پنجاب کانگریس صدر کے لئے پارٹی صدر سونیا گاندھی اور نائب صدر راہل گاندھی مسٹر باجوا ور امریندر سنگھ سے الگ الگ بات چیت کرچکے ہیں او رآج شام بھی میٹنگ جاری رہی۔ جلد ہی صدرکا اعلان ہونے کاامکان ہے۔

پارٹی ذرائع کے مطابق ابھی تک محترمہ سونی کا نام اوپر چل رہا ہے۔ حتمی فیصلہ تو محترمہ گاندھی اور راہل گاندھی پر منحصر ہے۔ پنجاب کے بیشتر لیڈران دہلی میں خیمہ زن ہیں۔واضح رہے کہ پنجاب کانگریس میں گروپ بندی سے اعلی کمان بخوبی واقف ہے اور اس کی شکایتیں گزشتہ چار برسوں سے محترمہ گاندھی کو ملتی رہی ہیں او رکئی بار مسٹر راہل گاندھی پنجاب کا دورہ کرچکے ہیں لیکن اس کا کوئی حل نہیں نکلا۔

Loading...

پچھلا اسمبلی انتخاب بھی کانگریس گروپ بندی کی وجہ سے ہاری۔ اب اعلی کمان اس طرح کا خطرہ مول لینا نہیں چاہتی۔انتخابات سے قبل کانگریس کو توانائی بخشنے اور مضبوطی فراہم کرنے کے لئے صدر کے عہدہ کا فیصلہ ضروری ہوگیا ہے۔

Loading...