شانِ رسالت مآب میں گستاخی کرنے والے کو عبرت ناک سزا دی جائے:عبد المنان سلفی

کونکٹی،سدھارتھ نگر۔ جب سے بی جے پی قیادت والی این ڈی اے حکومت مرکز میں برسراقتدار آئی ہے، اقلیتوں خصوصا مسلمانوں کو ہراساں کرنے اور ان کے جذبات کو مجروح کرنے کا نہ رکنے والا سلسلہ بدستور جاری ہے۔

Dec 14, 2015 03:17 PM IST | Updated on: Dec 14, 2015 03:19 PM IST
شانِ رسالت مآب میں گستاخی کرنے والے کو عبرت ناک سزا دی جائے:عبد المنان سلفی

کونکٹی،سدھارتھ نگر۔ جب سے بی جے پی قیادت والی این ڈی اے حکومت مرکز میں برسراقتدار آئی ہے، اقلیتوں خصوصا مسلمانوں کو ہراساں کرنے اور ان کے جذبات کو مجروح کرنے کا نہ رکنے والا سلسلہ بدستور جاری ہے۔ اسی ضمن میں ابھی چند دنوں پہلے آل انڈیا ہندو مہا سبھا کے عہدیدار راکیش تیواری نے نبی کریم ﷺ کی شان اقدس میں گستاخی کرکے مسلمانوں کے جذبات کوجو ٹھیس پہونچائی ہے اس پر مسلمانوں میں سخت غم و غصہ پایا جارہا ہے اور اس کے خلاف شدید ردعمل پیدا ہواہے اوربلا تفریق مسلک و مذہب تمام ہی لوگ اس ہرزہ سرائی پر سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں۔

اس تعلق سے ضلعی جمعیت اہل حدیث سدھارتھ نگر کے امیر مولانا محمد ابراہیم مدنی ،ناظم مولانا عبد المنان سلفی اور جمعیت کے دیگر ذمہ داران نے ایک اخباری بیان میں  راکیش تیواری کے اس شر انگیز بیان کی شدید مذمت کی ہے اور اسے نبی کریم ﷺ کی شان اقدس میں بے ادبی ،گستاخی اور مقام نبوت و رسالت کا استہزاء قرار دیتے ہوئے مجرم راکیش تیواری کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

مولانا عبد المنان سلفی نے کہا کہ نبی کریم ﷺ کی محترم شحضیت سے مسلمانوں کا جذباتی تعلق ہے اور آپ کی شان میں معمولی گستاخی بھی ان کے لئے ناقابل برداشت ہے خواہ اس کی انھیں کوئی بھی قیمت بھی چکانی پڑے، اس لئے مرکزی اور صوبائی حکومتوں کو ہمیشہ اس کا خیال رکھنا چاہئے اور مسلمانوں کے جذبات سے کھیلنے کا سلسلہ بند کردینا چاہئے۔  مولانا عبد المنان سلفی نے یہ بھی کہا کہ اس قسم کی بیہودہ حرکتیں ہندوستان کی گنگا جمنی تہذیب کو ختم کرنے اور ہندوستان میں فرقہ واریت کا زہرگھولنے کے مقصد سے بھی انجام دی جارہی ہیں ، اس لئے حکومت کو ایسے مجرموں سے سختی سے نمٹنا چاہئے تاکہ آئندہ کسی کو شان رسالت میں گستاخی کی جرأت نہ ہوسکے۔ مولانا عبد المنان سلفی نے تمام مسلمانوں سے اپیل کی ہے کہ نبی کریم ﷺ کے ناموس کے تحفظ کے لئے متحد ہوکر اس حرکت کی مذمت کریں اور ہر ممکن جمہوری اور آئینی طریقے استعمال کرکے خاطی کو قرار واقعی سزا دلانے کے لئے حکومت پر دباؤ ڈالیں ۔

Loading...

Loading...