آئی ایس آئی ایس کے خلاف الہ آباد میں علما اور دانشوروں کا مشترکہ اجلاس

الہ آباد : مسلم نوجوانوں کو آئی ایس آئی ایس کے اثرات سے بچانے کے لئے علما اور مسلم دانشوروں نے مل کر کو ششیں شروع کر دی ہیں ۔ دونوں طبقوں کے افراد نے داعش کے خلاف مسلم معاشرے میں بیداری لانے اور آئی ایس کے خلاف کھل کر بولنے کی اپیل کی ۔

Jan 04, 2016 07:56 PM IST | Updated on: Jan 04, 2016 07:56 PM IST
آئی ایس آئی ایس کے خلاف الہ آباد میں علما اور دانشوروں کا مشترکہ اجلاس

الہ آباد : مسلم نوجوانوں کو آئی ایس آئی ایس کے اثرات سے بچانے کے لئے علما اور مسلم دانشوروں نے مل کر کو ششیں شروع کر دی ہیں ۔ دونوں طبقوں کے افراد نے داعش کے خلاف مسلم معاشرے میں بیداری لانے اور آئی ایس کے خلاف کھل کر بولنے کی اپیل کی ۔

مہاتما گاندھی بین الاقوامی ہندی یونیورسٹی کی الہ آباد شاخ میں منعقدہ ایک اجلاس مسلم دانشوروں اور علماکرام نے شرکت کی۔جلسے میں امریکہ سے تعلق رکھنے والے ممتاز اسلامی اسکالر مفتی یاسر ندیم نے قر آن اور حدیث کی روشنی میں آئی ایس آئی ایس کو ایک غیر اسلامی تنظیم قرار دیا ۔مفتی یاسر نے کہا کہ آئی ایس آئی ایس کے خلاف بولنا اس وقت مسلمانوں کی پہلی ذمہ داری ہے ۔

دیگر دانشوروں نے کہا کہ مسلم نوجوانوں کو داعش کے اثرات سے بچانا وقت کی ضرورت ہے۔دانشوروں کا یہ بھی کہنا تھا کہ داعش کے خلاف مسلم ملکوں کو متحد ہو کر کار روائی کرنی چاہئے۔

ادھر مفتی یاسر ندیم کی تقریر میں کہیں بھی امریکہ یا اسرائیل کا نام نہ لئے جانے پر کچھ دانشوروں نے اپنی بر ہمی کا اظہار بھی کیا ۔ان کا کہنا تھا کہ آئی ایس آئی ایس کی تخلیق میں امریکہ اور اسرائیل کا اہم رول رہا ہے ایسے میں مسلم نوجوانوں کو اس حقیقت سے بھی رو شناس کرانے کی ضررورت ہے۔

Loading...

Loading...