உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    روس-یوکرین جنگ کے درمیان PM Modi اور بائیڈن کی اہم ورچوئل میٹنگ آج، ان موضوعات پر ہوگا تبادلہ خیال

    روس-یوکرین جنگ کے درمیان وزیر اعظم مودی اور بائیڈن کی اہم ورچوئل میٹنگ آج

    روس-یوکرین جنگ کے درمیان وزیر اعظم مودی اور بائیڈن کی اہم ورچوئل میٹنگ آج

    PM Narendra Modi meets US President Joe Biden: وزیر اعظم نریندر مودی اور امریکی صدر جو بائیڈن کے درمیان ورچوئل میٹنگ میں اہم بات چیت ہوگی۔ وزارت خارجہ کے مطابق، دونوں لیڈران اس دوران موجودہ دو طرفہ تعاون کا جائزہ لینے کے ساتھ ہی جنوبی ایشیا، ہند-بحرالکاہل میں حالیہ پیش رفت اور باہمی دلچسپی کے عالمی مسائل پر تبادلہ خیال کریں گے، لیکن روس یوکرین جنگ کے درمیان دونوں لیڈران کے درمیان کی میٹنگ کو کافی اہم مانا جا رہا ہے۔

    • Share this:
      نئی دہلی: روس-یوکرین جنگ کے درمیان ہندوستان اور امریکہ میں پیر کے روز اہم بات چیت ہونے والی ہے۔ اس کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی اور امریکی صدر جو بائیڈن کے درمیان ورچوئل میٹنگ ہوگی۔ وزارت خارجہ کے مطابق حالانکہ دونوں لیڈران اس دوران موجودہ دو طرفہ تعاون کا جائزہ لینے کے ساتھ ہی جنوبی ایشیا، ہند-بحرالکاہل میں حالیہ پیش رفت اور باہمی دلچسپی کے عالمی مسائل پر تبادلہ خیال کریں گے، لیکن روس یوکرین جنگ کے درمیان دونوں لیڈران کے درمیان کی میٹنگ کو کافی اہم مانا جا رہا ہے۔ وزرات خارجہ نے ایک بیان میں کہا، ’وزیر اعظم مودی اور امریکی صدر جو بائیڈن کی میٹنگ کے دوران موجودہ طرف تعاون کا جائزہ لینے کے ساتھ ہی جنوبی ایشیا، ہند بحرالکاہل کے حالیہ پیش رفت اور باہمی دلچسپی کے عالمی مسائل پر تبادلہ خیال کریں گے۔

      ٹو پلس ٹو ملاقات سے قبل اہم گفتگو

      بیان میں کہا گیا ہے، آن لائن میٹنگ دونوں فریق کو دو طرفہ جامع عالمی اسٹریٹجک پارٹنرشپ کو مزید مضبوط بنانے کے مقصد کے ساتھ اپنے باقاعدہ اور اعلیٰ سطحی رابطوں کو جاری رکھنے کے قابل بنائے گا۔ دونوں رہنماؤں کے درمیان یہ آن لائن ملاقات پیرکے روز واشنگٹن میں ہندوستان اور امریکہ کے درمیان 'ٹو پلس ٹو' وزارتی مذاکرات کے چوتھے اجلاس سے پہلے ہوگی۔

      وزیر دفاع راجناتھ سنگھ اور وزیر خارجہ ایس جے شنکر امریکی وزیر دفاع لائڈ آسٹن اور وزیر خارجہ اینٹی بلنکن کے ساتھ 11 اپریل کو واشنگٹن میں اس بات چیت کے چوتھے سیشن کے تحت بات چیت کریں گے۔ ایک دن پہلے ہی امریکی صدر جو بائیڈن نے ایک بیان میں کہا تھا کہ کسی بھی ملک کے موازنہ میں ہندوستان کے ساتھ دوستی ہمارے لئے بے حد اہم ہے۔ اس کے بعد دونوں لیڈروں کے درمیان میٹنگ ہو رہی ہے۔

      یہ بھی پڑھیں۔

      کورونا وائرس سے متعلق وزیر اعظم مودی نے کیا آگاہ، بولے- کووڈ ابھی گیا نہیں ہے، یہ شکل بدل رہا ہے

      روس اور امریکہ، ہندوستان کو اپنی طرف کرنے کی کوشش میں مصروف

      واضح رہے کہ روس-یوکرین جنگ کے بعد امریکہ، ہندوستان پر مسلسل دباؤ ڈال رہا ہے کہ وہ اقوام متحدہ میں روس کے خلاف ووٹ ڈالے اور مغربی ممالک کی طرف سے عائد اقتصادی پابندیوں کی حمایت کرے۔ دوسری جانب مغربی ممالک کی جانب سے اقتصادی پابندیوں کے بعد روس اپنے ملک سے تیل اور دیگر اشیا درآمد کرنے کی مسلسل کوشش کر رہا ہے۔

      ہندوستان ان کے ملک سے تیل اور دیگر سامان درآمد کرے

      روس نے ہندوستان کو سستی شرح پر تیل اور دیگرسامان دینے کا بھی آفر کیا ہے۔ اسی ضمن میں روس کے وزیر خارجہ سرگیئی لاورو ہندوستان آئے تھے۔ اقوام متحدہ میں ہندوستان نے غیر جانبدارانہ پالیسی اپناتے ہوئے قیام امن کی اپیل کی تھی۔ ساتھ ہی ہندوستان کسی بھی گروپ کے ساتھ نہیں رہنا چاہتا ہے، اس لئے دونوں ملک ہندوستان کو اپنے حق میں کرنے کی کوشش میں لگے ہوئے ہیں۔ ایک طرح سے دونوں ممالک کی طرف سے ہندوستان پر دباو ہے۔
      Published by:Nisar Ahmad
      First published: