سنت رامپال کا متنازعہ بیان، کہا مجھے ملک کی عدلیہ پر بھروسہ نہیں

پانی پت: سال 2009 میں رامپال کے خلاف درج ہوئے دھوکہ دہی کے معاملے کی بدھ کو روہتک کورٹ میں سماعت ہوئی ۔ اس دوران رامپال نے کہا کہ اسے اب عدلیہ پر بھروسہ نہیں ہے۔

Sep 02, 2015 09:33 PM IST | Updated on: Sep 02, 2015 09:35 PM IST
سنت رامپال کا متنازعہ بیان، کہا مجھے ملک کی عدلیہ پر بھروسہ نہیں

پانی پت: سال 2009 میں رامپال کے خلاف درج ہوئے دھوکہ دہی کے معاملے کی بدھ کو روہتک کورٹ میں سماعت ہوئی ۔ اس دوران رامپال نے کہا کہ اسے اب عدلیہ پر بھروسہ نہیں ہے۔

رامپال نے ایک بار پھر حصار جیل کے جیلر پر پریشان کرنے کا الزام لگایا اور کہا کہ جیلر انہیں اب بھی پریشان کر رہا ہے۔ رامپال نے یہ بھی کہا کہ انہیں عدلیہ پر بھروسہ نہیں ہے ۔ اس معاملے کی اگلی سماعت 16 ستمبر کو ہوگی۔

دراصل سنت رامپال داس کے خلاف كرونتھا آشرم کے لئے حاصل کی گئی زمین میں دھوکہ دہی کا 2009 میں مقدمہ درج ہوا تھا، جس کی سماعت روہتک عدالت میں چل رہی ہے ۔ رامپال کے اس کیس کی سماعت کے پیش نظر ضلع انتظامیہ نے کورٹ کے احاطے کے 500 میٹر کے دائرے میں دفعہ 144 نافذ کردیا تھا اور سیکورٹی کے پیش نظر بڑی تعداد میں پولیس فورس کو بھی تعینات کیا گیا تھا۔

صبح سے ہی رامپال کے پیروکار شہر میں جمع ہونا شروع ہو گئے تھے ، جنہیں کورٹ کے احاطے میں نہ آنے دینے کے لئے پولیس کو کافی مشقتکرنی پڑی ۔ تقریبا ساڑھے 10 بجے پولیس حصار جیل سے رامپال کو لے کر عدالت پہنچی۔

Loading...

رامپال کے وکیل رگھوبیر ہڈا نے بتایا کہ بدھ کو اس معاملے میں پولیس کی گواہی پوری ہو گئی ہے ۔جبکہ ایک گواہ کا بیان بھی درج کرلیا گیا ہے ۔ وہیں 313 کے تحت رامپال کا بیان بھی درج کیا گیا ہے اور دیگر ملزموں کے بیانات اگلی سماعت پر درج کئے جائیں گے۔

رامپال نے آج ایک بار پھر حصار جیل کے جیلر پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ وہ انہیں پریشان کر رہا ہے ۔ رامپال نے کہا کہ جیلر کے خلاف کوئی کارروائی نہ ہونے کی وجہ سے اس کے حوصلے بلند ہو گئے ہیں ، اس لئے وہ اب ملک کی عدلیہ پر بالکل بھی یقین کرتے ہیں ۔

Loading...