ہوم » نیوز » No Category

ہوشیار! ٹیلی گرام پر کم عمر کی لڑکیوں کے ساتھ ہو رہا ہے گندہ کھیل، اس تکنیک سے نیوڈ کی جا رہی ہیں خواتین کی تصویریں

اس کے ذریعے اب تک 1,00,000 خواتین اور لڑکیوں کی بغیر رضامندی والی نیوڈ تصویریں (Nude Photos) آن لائن شیئرکی گئی ہیں۔ جو جولائی 2019 اور 2020 کے بیچ بات کا استعمال کرکے بنائی گئی تھیں۔ متاثرین میں سے زیادہ کی یہ نجی تصویریں (personal photos) تھیں جنہیں سوشل میڈیا (Social Media) سے لیا گیا تھا۔

  • Share this:
ہوشیار! ٹیلی گرام پر کم عمر کی لڑکیوں کے ساتھ ہو رہا ہے گندہ کھیل، اس تکنیک سے نیوڈ کی جا رہی ہیں خواتین کی تصویریں
کم عمر کی لڑکیوں کے ساتھ گندہ کھیل

مقبول میسیجنگ ایپ ٹیلی گرام ' (Telegram) کو لیکر ایک بیحد ہی سنسنی خیز اور پریشان کر دینے والی خبر سامنے آئی ہے۔ اس میسیجنگ ایپ (Messeging App) نے گزشتہ دنوں بہت زیادہ مقبولیت حاصل کی ہے۔ کیونکہ اس پر پرائویسی (privacy) کا پختہ انتظام ہوتا ہے بلکہ اس پر بڑی فائلیں بھی آسانی سے شیئر کی جا سکتی ہیں۔ لیکن اب یہ ایپ ایک تنازعہ میں پھنس گیا ہے۔ پریشانی بن کر آیا ہے ایک ڈیپ فیک ٹول (deepfake tool) جس کے لئے اس پر کپڑے پہنے تصویر وں کے بھی کپڑے اترے جا سکتے ہیں۔ اس کے ذریعے سے اس سائٹ پر نابالغ لڑکیوں (Minor girls) کو نشانہ بنایا جارہا ہے اور انہیں پریشان کیا جا رہا ہے۔

اس کے ذریعے اب تک 1,00,000 خواتین اور لڑکیوں کی بغیر رضامندی والی نیوڈ تصویریں (Nude Photos) آن لائن شیئرکی گئی ہیں۔ جو جولائی 2019 اور 2020 کے بیچ بات کا استعمال کرکے بنائی گئی تھیں۔ متاثرین میں سے زیادہ کی یہ نجی تصویریں (personal photos) تھیں جنہیں سوشل میڈیا (Social Media) سے لیا گیا تھا۔ یہ سبھی خواتین تھیں اور کچھ دیکھے سے ہی نابالغ نظر آ رہی ہی تھیں۔ یہ بغیر نام کا باٹ (Artificial Learning) اور مشین لرننگ کا استعمال کرتا ہے جو ٹیلی گرام (Telegram) میسیجنگ ایپ (Messeging App) پر شیئر کی گئی تصویروں پر کام کرتا ہے۔

لوگوں کی نجی نارمل تصویروں کو باٹ نے بنایا نیوڈ

اس کے بارے میں رپورٹ کرنے والوں کا کہنا ہے کہ کسی کی بھی شبیہ لیکر اس پر اسے برہنہ کئے جانے کا خطرہ بنا رہتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس باٹ کے ذریعے جن خواتین اور لڑکیوں کے فیک نیوڈ بنائے گئے وہ عام لوگوں کی نجی تصویریں تھیں۔

POINTS TABLE:

سوشل میڈیا پر شیئر کی گئی کم عمر کی لڑکیوں کی تصویروں کو میسیجنگ ایل ٹیلی گرام پر ایک ڈیپ فیک باٹ کے ذریعے نیوڈ کرنے کرنے کیلئے نقلی کیا جارہا ہے۔ ایک نئی رپورٹ میں یہ بات سامنے آئی ہے۔رپورٹ مصنفین کے مطابق یہ پریشان کرنے والی تصاویر آرٹیفیشیل انٹیلیجینس (artifical Intelligence) کے سادہ تجربے ( simple experiment) پر مبنی ہیں اور اسی کے ذریعے بنائی گئی ہیں۔ یہ بالکل حقیقی سی لگتی ہیں۔
Published by: sana Naeem
First published: Oct 22, 2020 10:52 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading