میرٹھ میں قرض سے پریشان خاندان کے 5 اراکین کی اجتماعی خودکشی

ترپردیش کے میرٹھ شہر میں قرض میں ڈوبے ایک تاجر کے خاندان کی دو خواتین اور ایک بچے سمیت پانچ لوگوں نے پھانسی لگاکر اور زہر کھاکر خودکشی کرلی۔

Oct 07, 2016 03:58 PM IST | Updated on: Oct 07, 2016 03:58 PM IST
میرٹھ میں قرض سے پریشان خاندان کے 5 اراکین کی اجتماعی خودکشی

میرٹھ: ترپردیش کے میرٹھ شہر میں قرض میں ڈوبے ایک تاجر کے خاندان کی دو خواتین اور ایک بچے سمیت پانچ لوگوں نے پھانسی لگاکر اور زہر کھاکر خودکشی کرلی۔ پولیس ذرائع کے مطابق میرٹھ کے ٹرانسپورٹ نگر علاقے میں رگھوکل وہار کالونی کےرہنے والے غیر ملکی کمپنی کے ایئر فلٹر سپلایئر 70سالہ موہن اروڑا کا نوکر سنجے آج صبح سوا آٹھ بجے ان کے گھر پہنچا تو کسی نے دروازہ نہیں کھولا۔بعد میں پولیس کی مدد سے پڑوس کے مکان کی چھت سے کود کر جب اندر پہنچا تو پانچوں لوگ مردہ حالت میں ملے۔

انہوں نے بتایا کہ موہن اروڑا اپنے کمرے میں مردہ پائے گئے جنہوں نے زہر کھاکر اپنی جان دی جبکہ ان کی بیوی 65سلاہ کرشنا،42سالہ بیٹا ونیت ،اس کی 36سالہ بیوی پوجا اور 15سالہ بیٹےابھیشیک کی لاش پھانسی کے پھندے سے لٹکی ملی۔سبھی نے پھانسی سے پہلے اپنے ہاتھ کی نسیں بھی کاٹ لی تھیں۔

موقع سے تین خودکشی نامہ اور زہر کی بوتل بھی برآمد کی گئی ہے۔انگریزی میں لکھے گئے پانچ صفحوں کے خودکشی نوٹ میں ایک کروڑ 57لاکھ روپے کا قرض بتایا گیا ہے اور اس کے ادا نہ کرنے کی وجہ سے ہی باہمی اتفاق سے اجتماعی خودکشی کرنے کی بات کہی گئی ہے ۔خودکشی نامہ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ خاندان کے سبھی اراکین نے کافی سوچ سمجھ کر یہ قدم اٹھایا کیونکہ ان کے سامنے اور کوئی راستہ بچا ہی نہیں تھا۔

خاندان کے لوگوں نے خودکشی سے پہلے ہون بھی کیا جس کی تصدیق موقع پر ہون کے سامان اور راکھ ملنے سے کی گئی ہے۔پولیس نے لاشیں پوسٹ مارٹم کےلئے بھیج دی ہیں اور معاملے کی تفتیش شروع کردی ہے۔

Loading...

Loading...
Listen to the latest songs, only on JioSaavn.com