یوپی کے بعد مدھیہ پردیش اوراتراکھنڈ میں بھی کانگریس سے دوری قائم، مایاوتی اوراکھلیش مل کرلڑیں گےالیکشن

اس اتحاد کےتحت مدھیہ پردیش میں سماجوادی پارٹی محض تین سیٹوں پراور اتراکھنڈ میں ایک سیٹ پرالیکشن لڑے گی۔ باقی تمام سیٹوں پربی ایس پی کےامیدوارمیدان میں ہوں گے۔

Feb 25, 2019 04:49 PM IST | Updated on: Feb 25, 2019 04:54 PM IST
یوپی کے بعد مدھیہ پردیش اوراتراکھنڈ میں بھی کانگریس سے دوری قائم، مایاوتی اوراکھلیش مل کرلڑیں گےالیکشن

مایاوتی اوراکھلیش نے مدھیہ پردیش اوراتراکھنڈ میں بھی ایک ساتھ الیکشن لڑنے کا اعلان کیا۔

اترپردیش میں اتحاد کے بعد سماجوادی پارٹی اوربہوجن سماج پارٹی مدھیہ پردیش اور اتراکھنڈ میں بھی ایک ساتھ مل کرلوک سبھا کا الیکشن لڑیں گی۔ سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادواوربی ایس پی سربراہ مایاوتی نے ایک مشترکہ پریس ریلیزجاری کرکے اس کی اطلاع دی۔

اس اتحاد کےتحت مدھیہ پردیش میں سماجوادی پارٹی محض تین سیٹوں (بالا گھاٹ، ٹیکم گڑھ اورکھجروہو) سیٹ پرالیکشن لڑےگی۔ باقی تمام سیٹوں پربی ایس پی کےامیدوارمیدان میں ہوں گے۔ دوسری طرف اتراکھنڈ میں سماجوادی پارٹی کے حصے میں ایک سیٹ گئی ہے۔ اتحاد کےتحت سپا گڑھوال (پوڑی) لوک سیٹ سے الیکشن لڑے گی۔ باقی چارسیٹوں پربی ایس پی امیدوارمیدان میں ہوں گے۔

Loading...

غورطلب ہے کہ اترپردیش میں سماجوادی پارٹی اوربی ایس پی اتحاد کے تحت الیکشن لڑرہے ہیں۔ سماجوادی پارٹی 37 سیٹوں پرتوبی ایس پی 38 سیٹوں پرالیکشن لڑے گی۔ اتحاد میں راشٹریہ لوک دل (آرایل ڈی) کوبھی تین سیٹیں دی گئی ہیں۔ وہیں کانگریس کے گڑھ امیٹھی اور رائے بریلی میں اتحاد کوئی امیدوارنہیں اتارے گا۔

واضح رہے کہ حال ہی میں ہوئےمدھیہ پردیش اسمبلی الیکشن میں سماجوادی پارٹی ایک سیٹ اوربہوجن سماج پارٹی کودو سیٹ پرجیت حاصل ہوئی تھی۔ اسمبلی الیکشن میں دونوں ہی پارٹیاں الگ الگ انتخابی میدان میں تھیں۔ کئی سیٹوں پرایس پی - بی ایس پی امیدواروں نے کانگریس کا حساب خراب کردیا تھا۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ مدھیہ پردیش میں دونوں ہی پارٹیوں نے کانگریس حکومت کوحمایت دی ہے، لیکن لوک سبھا الیکشن کے لئے بننے والے اتحاد میں کانگریس کودورہی رکھا گیا ہے۔

Loading...