وزیراعظم عہدے کے لئے ممتا بنرجی کی کریں گے حمایت؟ اکھلیش یادو نے دیا یہ جواب

اترپردیش کے سابق وزیراعلیٰ نے نیوز 18 سے بات چیت میں کہا ممتا دیدی نے ملک کی خدمت کے لئے تبدیلی کے لئے ہم سبھی کو ایک ساتھ لانے کی پہل کی ہے۔ بی جے پی نے ملک میں غریبوں اورپسماندہ لوگوں کے لئے کچھ نہیں کیا ہے۔

Jan 20, 2019 12:37 PM IST | Updated on: Jan 20, 2019 12:37 PM IST
وزیراعظم عہدے کے لئے ممتا بنرجی کی کریں گے حمایت؟ اکھلیش یادو نے دیا یہ جواب

اکھلیش یادو نے کہا ہے کہ عظیم اتحاد میں ابھی اوربھی پارٹیاں شامل ہوں گی۔

اترپردیش میں بہوجن سماج پارٹی کے ساتھ 2019 کے لوک سبھا الیکشن کے لئے اتحاد کے اعلان کے تقریباً ایک ہفتہ بعد سماجوادی پارٹی کے سربراہ اکھلیش یادو نے اشارے دیئے ہیں کہ 'ایک بہترکل کے لئے دیگرپارٹیاں بھی آگے آکرہاتھ ملائیں گی'۔

اترپردیش کے سابق وزیراعلیٰ نے نیوز 18 سے بات چیت میں کہا 'ممتا دیدی نے ملک کی خدمت کے لئے تبدیلی کے لئے ہم سبھی کو ایک ساتھ لانے کی پہل کی ہے۔ بی جے پی نے ملک میں غریبوں اورپسماندہ لوگوں کے لئے کچھ نہیں کیا ہے۔ آج کسان پریشان ہیں، نوجوان بے روزگارگھوم رہے ہیں اورملک اقتصادی بدحالی سے گزررہا ہے۔ جی ایس ٹی اورنوٹ بندی کی وجہ سے عام آدمی کے خواب بکھرگئے۔ بی جے پی کواس بات کا جواب دینا ہوگا کہ لوگوں کے ساتھ اس نے ایسی ناانصافی کیوں کی'۔

Loading...

اکھلیش یادونے ساتھ ہی یہ بھی کہا کہ ملک میں تبدیلی کا پیغام مغربی بنگال سے شروع ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 'ایک کے بعد ایک لوگ اس تحریک سے منسلک ہونے کے لئے آگے آتے جارہے ہیں۔ انہیں بھی احساس ہورہا ہے کہ بی جے پی کواقتدارسے ہٹانا بے حد اہم ہے۔  اس چیلنج کواعتراف کرنے کے لئے میں دیدی (ممتا بنرجی) کومبارکباد دیتا ہوں۔ تبدیلی کا پیغام شروع ہوچکا ہے'۔

وہیں وزیراعظم عہدے کے امیدوارسے متعلق سوال پرانہوں نے کہا کہ  وہ (بی جے پی) پوچھ رہے ہیں کہ عظیم اتحاد کا چہرہ کون ہوگا؟ میں ان سے (بی جے پی سے) بھی یہی سوال پوچھنا چاہوں گا، اس باران کا چہرہ کون ہوگا'؟۔

اس کے علاوہ اکھلیش یادو سے جب عظیم اتحاد کے مستقبل کولے کرسوال کیا گیا توان کا جواب تھا "ہم نے یوپی میں بی ایس پی کے ساتھ اتحاد کیا ہے۔ یہاں تمام علاقائی لیڈرایک ساتھ ہیں۔ مجھے ذاتی طورپریہ لگتا ہے کہ لوک سبھا الیکشن میں یہ اسٹیج اہم کردارنبھائے گا، اس لئے میں بھی یہاں آیا ہوں۔ مایاوتی جی نے ستیش چندرمشرا کویہاں بھیجا ہے۔ سینئرلیڈروں کا ہاتھ ملانا ایک کامیاب عظیم اتحاد کا مضبوط پیغام ہے اوراس کا کریڈٹ دیدی کو جاتا ہے۔ مجھے ان سے کافی کچھ سیکھنے کی ضرورت ہے'۔

وہیں اکھلیش یادو سے جب یہ پوچھا گیا کہ اگر ٹی ایم سی سربراہ ممتا بنرجی وزیراعظم عہدہ کی دعویدارکی طرح ابھرتی ہیں تووہ ان کی حمایت کریں گے، توانہوں نے کہا کہ 'اس وقت ہماری ترجیح یہ نہیں ہے۔ ہمیں ابھی جمہوریت کو بچانا ہے، عہدہ کافیصلہ بعد میں کیا جاسکتا ہے'۔

Loading...