ایف آئی آر کو فاسٹ ٹریک کورٹ میں اخلاق کے کنبہ نے کیا چیلنج ، کہا : فورنسک جانچ میں کئی چیزوں کا تذکرہ نہیں

اخلاق کے کنبہ کے وکیل یوسف سیفی نے کہا کہ ہم نے فاسٹ ٹریک کورٹ کے جج وریندر سنگھ سے اس معاملے میں سی آر پی سی کی دفعہ 173 (8) کے تحت مزید تفصیلی جانچ کی درخواست کی ہے ۔

Jul 28, 2016 09:35 AM IST | Updated on: Jul 28, 2016 09:35 AM IST
ایف آئی آر کو فاسٹ ٹریک کورٹ میں اخلاق کے کنبہ نے کیا چیلنج ، کہا : فورنسک جانچ میں کئی چیزوں کا تذکرہ نہیں

گریٹر نوئیڈا : دادری سانحہ میں محمد اخلاق کے کنبہ نے ایف آئی آر درج کرنے کے عدالت کے حالیہ حکم کے خلاف فاسٹ ٹریک کورٹ کا رخ کیا ہے اور تفصیلی جانچ کا مطالبہ کیا ۔ اخلاق کے کنبہ کے وکیل یوسف سیفی نے کہا کہ ہم نے فاسٹ ٹریک کورٹ کے جج وریندر سنگھ سے اس معاملے میں سی آر پی سی کی دفعہ 173 (8) کے تحت مزید تفصیلی جانچ کی درخواست کی ہے ۔ ہم نے اس درخواست میں کچھ نکات پیش کئے ہیں ۔  گوشت کی مقدار 2 کلو گرام تھی ، لیکن فارنسک رپورٹ میں مقدار 4 کلو گرام بتائی گئی ہے ۔

اس کے علاوہ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہم نے گوشت کے رنگ کا بھی معاملہ بھی اٹھایا ہے ۔ فورنسک رپورٹ میں گوشت کے رنگ کا ذکر نہیں کیا گیا ہے ۔ سیفی نے کہا کہ ہم نے بتایا ہے کہ سنجے رانا اور دو دیگر لوگ اخلاق پر حملہ کرنے والوں کے نام جانتے ہیں ۔ ہم نے کوشش کی ہے کہ ان سے پوچھ گچھ کی جانی چاہئے اور قتل کے معاملے میں ملزم بنایا جانا چاہئے ۔

Loading...

Loading...