اقلیتی تعلیمی اداروں سے پاس آوٹ طلبہ کو ملازمت میں ریزر ویشن دینے سے ہائی کورٹ کا انکار

اقلیتی اداروں سے بی ٹی سی کرنے والے طلبہ کو معاون ٹیچرس کی بھرتی میں ریزر ویشن دینے کی درخواست کو الہ آباد ہائی کورٹ نے مسترد کر دیا ہے۔

Sep 02, 2016 03:08 PM IST | Updated on: Sep 02, 2016 03:08 PM IST
اقلیتی تعلیمی اداروں سے پاس آوٹ طلبہ کو ملازمت میں ریزر ویشن دینے سے ہائی کورٹ کا انکار

الہ آباد : اقلیتی اداروں سے بی ٹی سی کرنے والے طلبہ کو معاون ٹیچرس کی بھرتی میں ریزر ویشن دینے کی درخواست کو الہ آباد ہائی کورٹ نے مسترد کر دیا ہے۔ آگرہ کے رہنے والےعرضی گذار راہل یادو نے ایک اقلیتی ادارے سے بی ٹی سی کا کورس کیا تھا ۔عرضی گزار کا کہنا تھا کہ چوں کی اقلیتی تعلیمی اداروں میں پچاس فیصد ریزرو یشن موجود ہے ۔ لہذا معاون ٹیچرس کی بھرتی میں بھی ریزرویشن دیا جائے ۔

معاملہ کی سماعت کرتے ہوئے جسٹس ارون ٹنڈن اور جسٹس سنیتا اگروال نے کہا کہ آئین میں اقلیتی تعلیمی اداروں سے پاس آوٹ طلبہ و طالبات کے لئے الگ سے ریزر ویشن کا کوئی بندو بست موجود نہیں ہے ۔ لہذا اقلیتی تعلیمی اداروں سے پاس آوٹ طلبہ کو ریزر ویشن نہیں دیا جا سکتا ۔

قابل ذکر ہے کہ اقلیتی اداروں کے طلبہ ایک عرصے سے جد و جہد کر رہے ہیں کہ ریاستی سرکار ان کیلئے تعلیم کے بعد نوکری کا انتظام کرے اور موجودہ سماج وادی حکومت سے کچھ زیادہ ہی توقعات وابستہ کر رکھی تھیں۔ لیکن اب اس سرکار کا دور ختم ہونے جارہا ہے، مگر حکومت ابھی تک کوئی ایسا ٹھوس قدم نہیں اٹھا پائی ہے۔

Loading...

Loading...