امرتسر ٹرین حادثہ: پنجاب میں 60 لوگوں کی موت، بورڈ چیئرمین بولے ۔ ریلوے نہیں کرے گا حادثے کی جانچ

یہ ٹرین حادثے کا معاملہ نہیں ہے بلکہ ریل ٹریک انکروچمینٹ کا معاملہ ہے اس لئے ریلوے اس معاملے کی جانچ کا حکم نہیں دیگا۔

Oct 20, 2018 10:10 AM IST | Updated on: Oct 20, 2018 12:27 PM IST
امرتسر ٹرین حادثہ: پنجاب میں 60 لوگوں کی موت، بورڈ چیئرمین بولے ۔ ریلوے نہیں کرے گا حادثے کی جانچ

ریلوے بورڈ کے چیئرمین اشونی لوہانی نے کہا کہ یہ حادثہ ریلوے کے مین لائن پر ہوا جس میں ٹرینیں ایک فکسڈ اسپیڈ پر چلتی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ ڈی ایم یو ڈرائیور نے ہارن بجایا اور بریک لگانے کی کوشش بھی کی حالانکہ ڈی ایم یو کو روکنے کیلئے کم از کم 625 میٹر پہلے بریک لگانا ہوتا ہے۔ اس وجہ سے ڈرائیور ٹرین نہیں روک پایا۔ لوہانی نے کہا کہ جس ٹرین سے حادثہ ہوا وہ مستقل بنیاد پر چلتی ہے۔ یہ ٹرین حادثے کا معاملہ نہیں ہے بلکہ ریل ٹریک انکروچمینٹ کا معاملہ ہے اس لئے ریلوے اس معاملے کی جانچ کا حکم نہیں دیگا۔

افسران نے بتایا کہ راون کے پتلے کو آگ لگانے اور پٹاخے پھوٹنے کے بعد بھیڑ میں سے کچھ لوگ ریل کی پٹریوں کی جانب بڑھنا شروع ہو گئے جہاں پہلے سے ہی  بڑی تعداد میں لوگ کھڑے ہوکر راون دہن دیکھ رہے تھے۔

 انہوں نے بتایا کہ اسی وقت دو الگ سمتوں سے ایک ساتھ دو ٹرینیں آئیں اور لوگوں کو بچنے کا بہت کم وقت ملا۔ انہوں نے بتایا کہ ایک ٹرین کی چپیٹ میں کئی لوگ آئے۔
Loading...

Loading...