پاکستان کے دوبیٹ کمانڈرڈھیر، ہندوستانی فوج نےکہا 'دراندازوں کی لاش لے جائے پاکستان'۔

فوج نے کہا کہ ہمارے جوانوں نے اصل واقعہ کا پتہ لگانے کے لئے گھنے جنگلوں اورمشکل چڑھائی والے علاقوں میں طویل وقت تک تلاشی مہم چلائی، جس کے بعد یہ تصدیق ہوئی ہے کہ دراندازپاکستانی فوج کے جوان ہیں اوران کے پاس سے بڑی تعداد میں جنگی اشیا برآمد ہوئی ہے۔

Dec 31, 2018 12:54 PM IST | Updated on: Dec 31, 2018 12:54 PM IST
پاکستان کے دوبیٹ کمانڈرڈھیر، ہندوستانی فوج نےکہا 'دراندازوں کی لاش لے جائے پاکستان'۔

جموں وکشمیرکے کپواڑہ ضلع کے نوگام علاقے میں ہندوستانی فوج نے پاکستان کی بارڈر ایکشن ٹیم (بیٹ) کے دوکمانڈو کو مارگرایا۔ فوج نے پیرکواس کی اطلاع دیتے ہوئے کہا کہ یہ کمانڈوز(ممکنہ) ایل او سی پارکرنے کی فراق میں تھے، لیکن فوج پہلے سے محتاط تھی اور اس نے بیٹ حملے کوناکام کر دیا۔

فوج نے کہا کہ ہمارے جوانوں نے اصل واقعہ کا پتہ لگانے کے لئے گھنے جنگلوں اورمشکل چڑھائی والے علاقوں میں طویل وقت تک تلاشی مہم چلائی، جس کے بعد یہ تصدیق ہوئی کہ دراندازپاکستانی فوج کے جوان ہیں اوران کے پاس سے بڑی تعداد میں جنگی اشیا برآمد ہوئی ہے۔ فوج کے ایک ترجمان نے کہا 'اتوارکی صبح نوگام سیکٹرمیں کنٹرول بارڈرکے پاس بیٹ کی دراندازی کی کوششوں کوناکام بنا دیا گیا۔

Loading...

فوج نے بیان جاری کرکے کہا ہے کہ دراندازوں نے پاکستانی فوج کی طرح ڈریس پہن رکھی تھی۔ ساتھ ہی ان کے پاس جوسامان تھا، اس پرپاکستان کا نشان بھی تھا۔ برآمد سامان سے کہا جاسکتا ہے کہ وہ ہندوستانی فوج پرکوئی بڑاحملہ کرنے کی کوشش میں تھے۔ فوج کی طرف سے آگےکہا گیا ہے کہ ہم پاکستان سے کہیں گے کہ وہ ان کی لاش واپس لے جائیں، کیونکہ ان دراندازوں کو پاکستان سے پوری حمایت حاصل تھی۔

فوج نے کہا کہ دراندازآئی ای ڈی، آگ لگانے والی اشیا، ہتھیاروں اورگولہ بارود سے لیس تھے۔ خدشہ ظاہر کیاگیا ہے کہ وہ نوگام سیکٹرمیں ہندوستانی فوج پرکوئی خطرناک حملہ کرنے کی فراق میں تھے۔ فوج کے محتاط ہونے کی وجہ سے دراندازوں کے منصوبوں کوناکام کردیا گیا۔ نئے سال سے ٹھیک پہلے فوج نے جوابی کارروائی کی ہے۔

فوج کے افسران نے فوجیوں کی ہمت اورپختگی کی تعریف کی ہے۔ ترجمان نے کہا کہ ایل اوسی پر سخت نگرانی رکھنےاورپاکستان کے ایسے ہرایک ناپاک منصوبوں کو ناکام بنانے کے لئے ہندوستانی فوج پابندعہد ہے اورہروقت اس کے لئے تیارہے۔  فوج کی طرف سے واضح طورپرکہا گیا ہے کہ ہم پاکستان سے کہیں گے کہ وہ ان کی لاش واپس لے جائیں، کیونکہ ان دراندازوں کوپاکستان سے پوری حمایت حاصل تھی۔

Loading...