رام مندر - بابری مسجد تنازع : سنت آچاریہ ستیندر داس نے کہا : بی جے پی نے صرف ووٹ لیا

رام مندر - بابری مسجد تنازع کی سماعت جمعرات سے سپریم کورٹ میں شروع ہونی ہے ۔ سماعت سے پہلے اجودھیا کے سنتوں نے بی جے پی پر سنگین الزامات عائد کئے ہیں ۔

Feb 07, 2018 09:06 PM IST | Updated on: Feb 07, 2018 09:17 PM IST
رام مندر - بابری مسجد تنازع : سنت آچاریہ ستیندر داس نے کہا : بی جے پی نے صرف ووٹ لیا

فائل فوٹو

لکھنو : رام مندر - بابری مسجد تنازع کی سماعت جمعرات سے سپریم کورٹ میں شروع ہونی ہے ۔ سماعت سے پہلے اجودھیا کے سنتوں نے بی جے پی پر سنگین الزامات عائد کئے ہیں ۔ ان کا کہنا ہے کہ بی جے پی نے رام مندر کے نام پر صرف ووٹ لینے کا کام کیا ہے ۔ رام للا کے پجاری آچاریہ ستیندر داس نے بدھ کو کہا کہ بی جے پی مندر کی تعمیر سے راہ فرار اختیار کررہی ہے ۔ مرکزی حکومت کو پارلیمنٹ میں قانون بناکر مندر کی تعمیر کروانی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ رام مندر کی تعمیر 2018 میں شروع ہوجانی چاہئے۔

آچاریہ ستیندر داس کا کہنا ہے کہ بی جے پی رام مندر کے نام پر صرف ووٹ لیتی ہے ۔ پارٹی مندر کی تعمیر سے بھاگ رہی ہے ۔ بی جے پی رام مندر کے نام پر اقتدار میں آئی ، اب اسے رام مندر کی تعمیر شروع کروادینی چاہئے۔

ادھر تپسوی چھاونی رام گھاٹ کے پیٹھادھیشور سوامی پرم ہنس داس نے کہا کہ بی جے پی کی پاس اب کوئی بہانا نہیں ہے ۔ وزیر اعظم سے لے کر صدر جمہوریہ تک ، بی جے پی کا ہے ۔ اب 2018 میں ہی رام مندر کی تعمیر کا کام شروع ہو ، نہیں تو سنت سماج بی جے پی کا متبادل تلاش کرے گا۔ انہوں نے وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ اگر تعمیر کا کام شروع نہیں ہوا ، تو 2019 کے پہلے لاکھوں سنتوں کا خون بہایا جائے گا۔ سوامی پرم ہنس داس نے بی جے پی سنت سماج کو دھوکہ دینے کا بھی الزام عائد کیا۔

انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم مودی چائے کا پرچار کررہے ہیں ، اب ان کو دودھ کی بات کرنی چاہئے ، کیونکہ دودھ صحت کیلئے اچھا ہوتا ہے ۔ سوامی پرم ہنس داس نے کہا کہ رام مندر کی تعمیر کو لے کر پروانچل راجیہ سنگھرش سمیتی کی طرف سے 16 اپریل کو غازی پور سے ایودھیا تک جاگرن یاترا نکالی جائے گی۔

Loading...

ادھر سپریم کورٹ میں کیس کی سماعت شروع ہونے سے قبل بابری مسجد ایکشن کمیٹی کے کنوینر ظفریاب جیلانی نے بدھ کو کہا کہ ہماری تیاری پوری ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مقدمہ سے وابستہ سبھی کاغذات تیار کرلئے گئے ہیں ۔ یہ مسلمانوں کا لیڈنگ کیس ہے ۔ شیعہ سینٹرل وقف بورڈ چیئرمین وسیم رضوی کی اپیل پر ظفر یاب جیلانی نے کہا کہ وہ صرف میڈیا میں چھائے رہنے کیلئے یہ سب کرتے ہیں ۔ ان کا تو اس معاملہ میں کوئی حق ہی نہیں ہے ۔ شیعہ وقف بورڈ کے دعوی سے سپریم میں کیس پر کوئی اثر نہیں پڑنے والا ہے۔

Loading...