بی جے پی ایم ایل اے نے فیس بک پر لکھا، 2030 تک پورے ملک پر مسلم حکومت

اس متنازعہ پوسٹ کے بعد سنگھل نے واضح طور پر کہا ہے کہ ملک میں مسلم سوسائٹی 2030 تک پورے ملک کی باگ ڈور اپنے ہاتھ میں لے لے گی۔

Jan 01, 2018 09:46 PM IST | Updated on: Jan 01, 2018 09:46 PM IST
بی جے پی ایم ایل اے نے فیس بک پر لکھا، 2030 تک پورے ملک پر مسلم حکومت

پوسٹ کے سوال پر سنگھل نے کہا، 'میرے ذریعہ پوسٹ ڈالی گئی ہے۔

الور۔ راجستھان کے الور شہر سے بی جے پی رکن اسمبلی بنواری لال سنگھل نے فیس بک پوسٹ سے ایک تنازع کھڑا کر دیا ہے۔ اس متنازعہ پوسٹ کے بعد سنگھل نے واضح طور پر کہا ہے کہ ملک میں مسلم سوسائٹی 2030 تک پورے ملک کی باگ ڈور اپنے ہاتھ میں لے لے گی۔ اس کے لئے ایک سوچی سمجھی حکمت عملی کے تحت مسلمانوں کی آبادی بڑھائی جا رہی ہے۔

سنگھل کہتے ہیں کہ ہندو جوڑے ایک یا دو بچے پیدا کرتے ہیں۔ جبکہ مسلم جوڑے 8 سے 10-12 تک بچے پیدا کر رہے ہیں۔ کئی بار تو مسلم جوڑے بچے پیدا کرنے کے لئے خواتین کو خرید کر لاتے ہیں اور بچے پیدا کرتے ہیں۔ اس تیز رفتار سے مسلمانوں کی آبادی بڑھ رہی ہے۔ آنے والے سالوں میں ہندوؤں کا وجود خطرہ میں پڑ جائے گا۔

Loading...

انہوں نے کہا کہ مسلم آبادی زیادہ ہونے پر زیادہ سے زیادہ ریاستوں میں وزیر اعلی، ملک کا وزیر اعظم اور صدر مسلمان ہوں گے۔ اس کے بعد ان کے ذریعہ اس طرح کے قوانین بنائے جائیں گے کہ ہندوؤں کا وجود ہی خطرے میں پڑ جائے گا۔ مسلم ہندوؤں کو جیلوں میں ٹھونس دیں گے اور وہ خود ہی ہندوؤں کے وسائل کا استعمال کریں گے۔

پوسٹ کے سوال پر سنگھل نے کہا، 'میرے ذریعہ پوسٹ ڈالی گئی ہے۔ انہیں پیر کی صبح ایک ویڈیو موصول ہوئی تھی جس میں ایک چینل پر سنت کی طرف سے ایک لائیو ڈبیٹ میں حقیقت اور عددی حقائق پیش کئے گئے ہیں۔ ان سے متاثرہو کر میں نے یہ پوسٹ ڈالی ہے۔ سنت کی طرف سے اعداد وشمار پیش کئے گئے ہیں اور وہ صحیح ہیں۔ اسی کو بنیاد مانتے ہوئے میں نے سماج کے لوگوں کو بیدار کرنے کے لئے فیس بک کے ذریعہ پوسٹ ڈالی ہے اور سنت کا لائیو ویڈیو بھی شئیر کیا ہے۔

Loading...