بی جے پی ایم ایل سی بقل نواب بدعنوانی کا الزام لگا کرشیعہ وقف بورڈ سے مستعفی

بی جے پی لیڈر کے مطابق شیعہ وقف بورڈ بدعنوانی کے معاملہ میں ریاست میں سب سے بڑا بورڈ ہے۔

Sep 10, 2018 08:45 PM IST | Updated on: Sep 10, 2018 08:45 PM IST
بی جے پی ایم ایل سی بقل نواب بدعنوانی کا الزام لگا کرشیعہ وقف بورڈ سے مستعفی

بی جے پی ایم ایل سی بقل نواب: فائل فوٹو

لکھنؤ: بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی ) کے قانون سازکونسل کے رکن بقل نواب نے پیرکے روزشیعہ وقف بورڈ کی رکنیت سےاستعفی دے دیا اوربورڈ میں بدعنوانی کا الزام لگاتے ہوئے اسے تحلیل کرنے کا مطالبہ کیا۔

محکمہ اقلیتی بہبود کے پرنسپل سکریٹری کو بھیجے گئے ایک خط میں بی جے پی لیڈر نے تسلیم کیا کہ اس وقت کے وزیراور سماجوادی پارٹی کے قدآور لیڈراعظم خاں کے کہنے پر انھوں نے شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کو ووٹ دیاتھا جو ان کی زندگی کی بڑی غلطی ثابت ہوئی ہے۔

انہوں نے خط میں الزام لگاتے ہوئے کہا ’’رکن بننے کے بعد میں نے آج تک بورڈ کی کسی بھی میٹنگ میں شرکت نہیں کی۔ میں مانتاہوں کہ شیعہ وقف بورڈ بدعنوانی کے معاملہ میں ریاست میں سب سے بڑا بورڈ ہے"۔

Loading...

یہ بھی پڑھیں:    دیوبندی عالم نے بی جے پی لیڈر بکل نواب کو اسلام سے خارج قرار دیا

بی جےپی ایم ایل سی نے شیعہ وقف بورڈ کو فوراً تحلیل کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے بورڈ کی رکنیت سے استعفی دے دیا۔ بی جے پی لیڈر کایہ قدم موجودہ چیئرمین وسیم رضوی کے لئے بڑا دھچکا ماناجارہاہے۔ اجودھیا میں رام مندرکی تعمیر کی وکالت کے تعلق سے وسیم رضوی پہلی بار سرخیوں میں آئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں:     شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کو اسلام سے خارج کیا گیا ، مددگاروں کے بھی بائیکاٹ کی اپیل

 

انہوں نے مسلم علما کے خلاف کئی متنازعہ بیانات دیئے۔ معروف شیعہ عالم مولانا کلب جواد پہلے ہی رضوی کو شیعہ وقف بورڈ سے ہٹانے کا مطالبہ کرچکے ہیں۔ انھوں نے علما کےخلاف نازیبا تبصرہ کرنےپر وسیم رضوی کو شیعہ مسلک سے باہر کرنے کی وکالت کی تھی، جس کے بعد انہیں مذہب اسلام سے خارج قرار دے دیا گیا ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں:   اترپردیش:  شیعہ وقف بورڈ کی ملی بھگت سے وقف املاک میں خرد برد کئے جانے کا الزام

 

Loading...