کشمیر میں ہندوستان کے خلاف بولنے والوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا جائے گا: بی جے پی

جموں۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے وادی کشمیر میں ایک مہینے تک جاری رہنے والے ’رمضان سیز فائر‘ میں توسیع نہ کئے جانے کے مرکزی حکومت کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ وادی میں بھارت کے خلاف بولنے والوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا جائے گا۔

Jun 18, 2018 10:06 AM IST | Updated on: Jun 18, 2018 10:21 AM IST
کشمیر میں ہندوستان کے خلاف بولنے والوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا جائے گا: بی جے پی

ہندوستانی فوج: فائل فوٹو، پی ٹی آئی

جموں۔  بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے وادی کشمیر میں ایک مہینے تک جاری رہنے والے ’رمضان سیز فائر‘ میں توسیع نہ کئے جانے کے مرکزی حکومت کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ وادی میں بھارت کے خلاف بولنے والوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا جائے گا۔ پارٹی کا کہنا ہے کہ اب آپریشن آل آوٹ کو دوبارہ شروع کرکے جنگجوؤں کو چن چن کر ہلاک کیا جائے گا۔ بتا دیں کہ وادی میں رمضان المبارک کے پیش نظر جاری ایک مہینے کی یکطرفہ جنگ بندی کی مدت ختم ہونے کے بعد مرکزی وزارت داخلہ نے اتوار کے روز اس میں مزید توسیع کرنے سے انکار کردیا۔

بی جے پی جموں وکشمیر یونٹ کے صدر رویندر رینا نے فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا ’رمضان کے مہینے میں مرکزی حکومت نے کشمیر میں امن وامان کے لئے ایک قدم اٹھایا تھا۔ لیکن پاکستان کی حمایت یافتہ علیحدگی پسندوں اور جنگجوؤں نے رمضان میں بھی حالات کو خراب کرنے کی کوششیں کیں۔ عید کے موقع پر بھی کوشش کی گئی کہ کشمیر میں خون خرابہ او ر بے گناہوں کا قتل نہ ہو۔ اس لئے مرکزی حکومت نے رمضان سیز فائر کو منسوخ کیا ہے‘۔ ان کا مزید کہنا تھا ’ یہ بہت اچھا فیصلہ ہے۔ اب ہم چن چن کر جنگجوؤں کو ٹھکانے لگائیں گے۔ ہم پاکستان، علیحدگی پسندوں اور پتھربازوں کو کسی بے گناہ کا قتل کرنے کی کبھی اجازت نہیں دیں گے۔ جو ہندوستان کے خلاف آواز اٹھائے گا، اس کو موت کے گھاٹ اتار دیا جائے گا‘۔

بی جے پی کے سینئر لیڈر اور نائب وزیر اعلیٰ کویندر گپتا نے کہا کہ اب آپریشن آل آوٹ کو دوبارہ شروع کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا ’حکومت کی طرف سے لئے گئے اس فیصلے کا خیرمقدم کرتا ہوں۔ ہم نے جنگجوؤں کے تئیں کبھی نرم رویہ اختیار نہیں کیا ہے۔ گذشتہ ایک برس کے دوران قریب دو سو جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا ہے۔ اب آپریشن آل آوٹ دوبارہ شروع کیا جائے گا‘۔

نائب وزیر اعلیٰ نے کہا کہ جنگجوؤں کا اب بہت برا حشر ہونے والا ہے۔ ان کا کہنا تھا ’دہشت گردی کا کوئی دھرم نہیں ہوتا۔ ہم نے ایک دھرم کی عزت کرتے ہوئے ایک موقع دیا تھا۔مجھے لگتا ہے کہ انہیں یہ راس نہیں آیا۔ ان کا کیا حشر ہونے والا ہے، یہ اب آنے والا وقت ہی بتائے گا‘۔

Loading...

Loading...