سدھو کے پاکستان دورے پر جانے سے پہلے پھر سے سوچنے کو کہا تھا: پنجاب کے وزیر اعلی

سدھو کا یہ پاکستان کا دوسرا دورہ ہے اور اس کو لے کر وہ ایک بار پھر لوگوں کے نشانے پر ہیں

Nov 28, 2018 12:39 PM IST | Updated on: Nov 28, 2018 01:03 PM IST
سدھو کے پاکستان دورے پر جانے سے پہلے پھر سے سوچنے کو کہا تھا: پنجاب کے وزیر اعلی

پنجاب کے وزیر اعلی کیپٹن امریندر سنگھ بھی سدھو کے پاکستان دورے کے فیصلے سے خوش نظر نہیں آ رہے ہیں

پاکستان میں 28 نومبر یعنی بدھ کو کرتارپور کوریڈور کا سنگ بنیاد رکھا جائے گا۔  اس خاص موقع پر شامل ہونے کے لئے پنجاب حکومت میں وزیر نوجوت سنگھ سدھو منگل کو پاکستان پہنچے ہیں۔ سدھو کا یہ پاکستان کا دوسرا دورہ ہے اور اس کو لے کر وہ ایک بار پھر لوگوں کے نشانے پر ہیں۔

پنجاب کے وزیر اعلی کیپٹن امریندر سنگھ بھی سدھو کے پاکستان دورے کے فیصلے سے خوش نظر نہیں آ رہے ہیں۔ سدھو کے پاکستان جانے کے فیصلہ کی تنقیدوں کے درمیان وزیر اعلیٰ امریندر سنگھ نے کہا ہے کہ انہوں نے اپنے ساتھی سے اس فیصلہ پر نظرثانی کرنے کو کہا ہے۔

Loading...

ساتھ ہی سنگھ نے کہا کہ انہوں نے اجازت کے لئے سدھو کی درخواست اس لیے قبول کر لی کیونکہ وہ کسی کو 'ذاتی سفر' کرنے سے انکار نہیں کر سکتے ہیں۔ وزیر اعلی نے کہا کہ سدھو مدھیہ پردیش میں انتخابی مہم چلا رہے تھے، اسی دوران ان سے فیصلے پر دوبارہ غور کرنے کی درخواست کی۔ انہوں نے کہا، "سدھو نے مجھے بتایا کہ وہ پہلے ہی جانے کا وعدہ کر چکے ہیں۔ جب میں نے اس معاملہ پر اپنے موقف سے انہیں آگاہ کرایا تو انہوں نے کہا کہ کہ یہ ذاتی دورہ ہے، لیکن وہ مجھ سے بات کریں گے۔ لیکن اب تک میری ان سے کوئی بات چیت نہیں ہوئی ہے۔ "

یہ بھی پڑھیں: پاکستان پہنچے نوجوت سنگھ سدھو، کرتارپور صاحب کوریڈور کو بتایا امیدوں کا گلیارا

اس سے پہلے پاکستان کے دورے پر گئے سدھو نے پریس کانفرنس میں کہا کہ کرتارپور کوریڈور دونوں ممالک کے درمیان امن، خوشحالی اور کاروباری تعلقات کو کھولنے کے لامتناہی امکانات کا راستہ ہے۔ پاکستان آرمی چیف سے گلے ملنے پر بات کرتے ہوئے سدھو نے کہا کہ، 'وہ جھپی صرف ایک سیکنڈ کی تھی۔ وہ کوئی رافیل ڈیل نہیں تھی۔ ' انہوں نے کہا کہ 'جب دو پنجابی ملتے ہیں، تو وہ ایسے ہی گلے ملتے ہیں۔ یہ پنجاب میں عام بات ہے۔ '

Loading...