ہریش راوت کا اعتراف، اتراکھنڈ کی سرحد میں گھس آئے تھے چینی فوجی

اتراکھنڈ کے چمولی میں چینی فوجیوں کی دراندازی کے واقعہ کے بعد سی ایم راوت بھی سکتے میں ہیں۔

Jul 27, 2016 04:57 PM IST | Updated on: Jul 27, 2016 04:59 PM IST
ہریش راوت کا اعتراف، اتراکھنڈ کی سرحد میں گھس آئے تھے چینی فوجی

دہرادون۔ اتراکھنڈ میں ایک بار پھر چینی فوجیوں نے دراندازی کی ہے۔ بتایا جا رہا ہے کہ ہندوستانی سرحد میں واقع باڑاہوتی کا معائنہ کرنے گئی انتظامی ٹیم کا چینی فوجیوں سے سامنا ہوا۔ اس دوران فوجیوں نے ٹیم کو واپس لوٹنے کا اشارہ بھی کیا۔ اس واقعہ کے بعد ریاست کے وزیر اعلی ہریش راوت نے کہا ہے کہ معاملہ بہت سنگین ہے اور اس واقعہ سے مرکز کو آگاہ کر دیا ہے۔

اتراکھنڈ کے چمولی میں چینی فوجیوں کی دراندازی کے واقعہ کے بعد سی ایم راوت بھی سکتے میں ہیں۔ سی ایم نے کہا ہے کہ انہوں نے اپنے تمام افسران کو حکم دیا ہے کہ موقع پر نظر بنائے رکھیں۔ ساتھ ہی، فوجیوں کو بھی وہاں اور مستعد رہنے کو کہا ہے۔

Loading...

بتا دیں کہ چمولی کے افسر سالانہ معائنہ کے لئے ہر سال نکلتے ہیں۔ اسی معائنہ کے دوران ہی کچھ چینی فوجیوں کا سامنا اس ٹیم سے ہوا تھا۔ ٹیم میں نائب ضلع مجسٹریٹ یوگیندر سنگھ کے ساتھ 19 افراد موجود تھے۔ اس واقعہ سے چمولی کے ضلع مجسٹریٹ نے سی ایم کو واقف کرایا۔ اس کے بعد ریاستی حکومت نے بھی اس واقعہ سے مرکز کو آگاہ کیا ہے۔ آئی ٹی بی پی نے 19 جولائی کو حکومت ہند کو اس سلسلے میں رپورٹ بھی دی تھی۔

Loading...