بوفورس معاملہ میں اپیل مودی سرکارکی ’اوچھی‘ حرکت: کانگریس کا حملہ

نئی دہلی۔ کانگریس نے بوفورس معاملہ میں اپیل دائرکرنے پر مودی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے آج کہا کہ اگلے لوک سبھا انتخابات میں عوام کی ناراضگی سے بچنے اور اصل مسائل سے توجہ ہٹانے کے لئے وہ اس طرح کی ’اوچھی ‘حرکت کررہی ہے ۔

Feb 03, 2018 04:35 PM IST | Updated on: Feb 03, 2018 04:35 PM IST
بوفورس معاملہ میں اپیل مودی سرکارکی ’اوچھی‘ حرکت: کانگریس کا حملہ

کانگریس کے میڈیا سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں پریس بریفنگ میں ایک سوال کے جواب میں کہا کہ دہلی ہائی کورٹ نے 2005میں اس معاملہ میں سابق وزیر اعظم راجیوگاندھی کو کلین چٹ دیکربی جے پی کی غلط تشہیر کی قلعی کھول دی تھی ۔

نئی دہلی۔ کانگریس نے بوفورس معاملہ میں اپیل دائرکرنے پر مودی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے آج کہا کہ اگلے لوک سبھا انتخابات میں عوام کی ناراضگی سے بچنے اور اصل مسائل سے توجہ ہٹانے کے لئے وہ اس طرح کی ’اوچھی ‘حرکت کررہی ہے ۔ کانگریس کے میڈیا سیل کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں پریس بریفنگ میں ایک سوال کے جواب میں کہا کہ دہلی ہائی کورٹ نے 2005میں اس معاملہ میں سابق وزیر اعظم راجیوگاندھی کو کلین چٹ دیکربی جے پی کی غلط تشہیر کی قلعی کھول دی تھی اور کانگریس قیادت کے خلاف اس کی سازش کا پردہ فاش کردیا تھا۔

انھوں نے دعوی کیا کہ مودی حکومت کے اٹارنی جنرل نے بھی اسے چھوٹا معاملہ بتایا ہے اور اپیل نہ دائرکرنے کی صلاح دی تھی ۔ اس کے باوجود مودی حکومت نے مسٹر گاندھی کی موت کے تقریبا تین دہائی بعد اس معاملہ میں اپیل دائر کر کے ’اوچھی ‘ حرکت کی ہے۔ مسٹر سرجے والا نے کہا کہ 2019کے لوک سبھا انتخابات میں اپنی ہار سے خوف زدہ بی جے پی نے عوام کی توجہ اصل مسائل سے ہٹانے کے لئے یہ حرکت کی ہے ۔ مسٹر سرجے والا نے کہا کہ جہاں تک بوفورس توپوں کا سوال ہے تو کارگل جنگ میں انھیں آزمایا جا چکا ہے ۔ جنگ کے دوران جب ان توپوں سے نکلے گولوں کی آگ سے دشمن کے حوصلے پست ہورہے تھے توفوجی ’راجیوگاندھی امر رہیں ‘ کے نعرے لگا رہے تھے ۔

واضح رہے کہ سی بی آئی نے بوفورس معاملہ میں کل سپریم کورٹ میں خصوصی عرضی دائرکی ۔ سی بی آئی نے دہلی ہائی کورٹ کے 31مئی 2005کے فیصلے کے خلاف عدالت عظمی میں اپیل دائرکی ہے ۔ ہائی کورٹ نے سیاسی اعتبار سے حساس اس معاملہ کے ملزمان کو بری کردیا تھا، لیکن تب سی بی آئی نے اس کے خلاف اپیل نہیں کی تھی ۔ اب سی بی آئی کا کہنا ہے کہ اسے اس معاملے میں کچھ پختہ ثبوت ملے ہیں ۔ سی بی آئی کی طرف سے اپیل نہ دائر کئے جانے کے بعد پیشہ سے وکیل اجے اگروال نے اپیل دائر کی تھی جس کی سماعت چیف جسٹس دیپک مشرا کی سربراہی والی بنچ کے سامنے اب شروع ہوئی ہے ۔

Loading...

Loading...