كارتی کی گرفتاری حکومت کی چال: کانگریس، گرفتاری قانون کے تحت: بی جے پی

نئی دہلی۔ کانگریس نے اس کے سینئر لیڈراور سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم کے بیٹے كارتي چدمبرم کی گرفتاری کو مودی حکومت کے روز اجاگر ہو رہی بدعنوانی اور گھوٹالوں کی جانب سے توجہ بھٹکانے کی حکمت عملی قرار دیا ہے۔

Feb 28, 2018 01:40 PM IST | Updated on: Feb 28, 2018 01:40 PM IST
كارتی کی گرفتاری حکومت کی چال: کانگریس، گرفتاری قانون کے تحت: بی جے پی

سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم کے بیٹے كارتي چدمبرم : فائل فوٹو۔

نئی دہلی۔ کانگریس نے اس کے سینئر لیڈراور سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم کے بیٹے كارتي چدمبرم کی گرفتاری کو مودی حکومت کے روز اجاگر ہو رہی بدعنوانی اور گھوٹالوں کی جانب سے توجہ بھٹکانے کی حکمت عملی قرار دیا ہے۔ کانگریس کے شعبہ مواصلات کے سربراہ رنديپ سنگھ سرجےوالا نے آئی این ایكس میڈیا معاملہ میں مسٹرکارتی چدمبرم کی گرفتاری پر سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے ٹویٹ کیا کہ یہ گرفتاری نیرو مودی، میہهل چوكسي، ڈی ڈی جوئیلزز اور روٹومیك جیسے نت نئے اجاگر ہو رہے گھوٹالوں اور بدعنوانی کے معاملات کی جانب سے عوام کی توجہ بھٹکانے کی بڑی چال ہے۔

مسٹر سرجےوالا نے مودی حکومت پرانتقام کی سیاست کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ مسٹر کارتی چدمبرم کے خلاف بدلے کے جذبے سے کتنی بھی کارروائی کرتی رہے، لیکن وہ کانگریس کو عوام کے سامنے سچ لانے سے روک نہیں سکے گی۔ قابل ذکر ہے کہ مرکزی تفتیشی بیورو نے بدعنوانی کے ایک معاملے میں مسٹر كارتي چدمبرم کو آج  چنئی سے گرفتار کیا ہے۔

کارتی کی گرفتاری قانون کے تحت: بی جے پی

Loading...

وہیں، بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے سینئر کانگریس لیڈر پی چدمبرم کے بیٹے كارتی چدمبرم کی گرفتاری پر کسی قسم کے بغض کی سیاست کے تحت مرکزی حکومت کے کردار ہونے سے آج صاف انکار کیا اور کہا کہ اس معاملے میں قانون نے اپنا کام کیا ہے۔ بی جے پی کے ترجمان سنبت پاترا نے ایک ٹی وی چینل کو دئیے اپنے بیان میں کہا "وہ لوگ جو اس میں انتقامی سیاست کی بات کہہ رہے ہیں، انہیں قانونی تفتیش کے سامنے پہلے خود کو پیش کرنا چاہئے۔ یہ معاملہ وزارت خزانہ کے سال 2007 کی مدت سے جڑا ہوا ہے‘‘۔

پاترا نے کانگریس لیڈر رنديپ سنگھ سرجےوالا کے الزامات سے بھی انکار کیا کہ حکومت 'الگ طرح کے اصولوں' میں شامل رہی ہے۔ انہوں نے کہا’’بدعنوانی کے خلاف جدوجہد کو کس طرح انتقامی حکمت عملی کہا جا سکتا ہے۔ آج قانون نے اپنا کام کیا ہے‘‘۔

Loading...