دادری سانحہ : اخلاق کے قتل کے ملزم روی کی موت پولیس کی پٹائی نہیں بلکہ انفیکشن کی وجہ سے ہوئی ؟

بساهڑا گاؤں میں اخلاق کے قتل کے ملزم روی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ عدالتی مجسٹریٹ کو سونپ دی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق کہ رپورٹ میں موت کی وجہ جسم میں انفیکشن بتائی گئی ہے۔

Oct 10, 2016 11:43 PM IST | Updated on: Oct 10, 2016 11:45 PM IST
دادری سانحہ : اخلاق کے قتل کے ملزم روی کی موت پولیس کی پٹائی نہیں بلکہ انفیکشن کی وجہ سے ہوئی ؟

نئی دہلی: بساهڑا گاؤں میں اخلاق کے قتل کے ملزم روی کی پوسٹ مارٹم رپورٹ عدالتی مجسٹریٹ کو سونپ دی گئی ہے۔ ذرائع کے مطابق کہ رپورٹ میں موت کی وجہ جسم میں انفیکشن بتائی گئی ہے۔ این ڈی ٹی وی ڈاٹ کام کی ایک خبر کے مطابق رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ روی کے پھیپھڑوں میں انفیکشن اتنا زیادہ ہو گیا تھا کہ اس میں پیپ ہوگیا تھا ، جس کی وجہ سے اس کے اعضا نے کام کرنا بند کر دیا تھا ۔ خاص طور سے اس کے گردے نے۔

خیال رہے کہ روی کے اہل کانہ نے الزام لگایا تھا کہ اس کی موت جیل میں زدوکوب کئے جانے کی وجہ سے ہوئی ہے۔ اہل خانہ کے الزام کے بعد ریاستی حکومت نے جیلر ہٹا دیا تھا ۔ تاہم پوسٹ مارٹم رپورٹ کے مطابق روی کے جسم کے اندر یا باہر چوٹ کا کوئی نشان نہیں ہے ۔

روی کو جیل کے افسران 4 اکتوبر کو دہلی کے ایل این جے پی اسپتال میں لے کر آئے تھے اور اسی دن شام کو اس کی موت ہو گئی تھی۔ اس کے بعد گھر والوں کے مطالبہ پر 5 اکتوبر کو تین ڈاکٹروں کے پینل نے اس کا پوسٹ مارٹم کیا۔ روی کی موت کے بعد اس کے گاؤں بساهڑا میں کشیدگی پھیل گئی تھی۔ روی کے اہل خانہ نے گئوكشي کے الزام میں اخلاق کے بھائی جان محمد کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے ایک کروڑ روپے کے معاوضہ اور جیلر کی گرفتاری کا مطالبہ کیا تھا ۔

یوپی حکومت نے سی بی آئی جانچ کی بات کہہ کر روی کے کنبہ کو 25 لاکھ روپے کا معاوضہ دینے کا اعلان کیا تھا اور ساتھ ہی ساتھ جیلر کو بھی ہٹا دیا تھا ۔ تاہم پوسٹ مارٹم رپورٹ نے اہل خانہ کے الزام کو مسترد کردیا ہے۔ اب اس بات کی جانچ ہوگی کہ کیا جیل کے حکام نے روی کے علاج میں کوئی کوتاہی برتی تھی۔

Loading...

Loading...