موسمی بخار، چکن گنیا اور ڈینگو سے بچاؤ کیلئے آیوروید ، یونانی اور ہومیو پیتھک کا لوگ اب لے رہے ہیں سہارا

ڈینگو کا وائرس ملیریا اور دماغی بخار سے بھی خطرناک ثابت ہو رہا ہے ۔ گزشتہ کچھ ہفتوں میں جہاں ڈینگو کے مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہوا ہے ۔

Sep 09, 2016 05:03 PM IST | Updated on: Sep 09, 2016 05:03 PM IST
موسمی بخار، چکن گنیا اور ڈینگو سے بچاؤ کیلئے آیوروید ، یونانی اور ہومیو پیتھک کا لوگ اب لے رہے ہیں سہارا

میرٹھ : ڈینگو کا وائرس ملیریا اور دماغی بخار سے بھی خطرناک ثابت ہو رہا ہے ۔ گزشتہ کچھ ہفتوں میں جہاں ڈینگو کے مریضوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہوا ہے ۔ وہیں اس بیماری کا سب سے زیادہ خطرہ این سی آر میں نظر آ رہا ہے۔ ڈینگو اور چکن گنیا کے اس خطرے سے بچاؤ کے لئے ایلوپیتھی میں کوئی دوا اور ٹیکا موجود نہیں ہے ، تاہم آیوروید ، یونانی اور ہومیو پیتھ کے دعوے کے مطابق ایسی دوائیں موجود ہیں ، جو انسانی جسم میں وائرس سے لڑنے کی طاقت پیدا کرتی ہیں۔

میرٹھ میں اب تک ڈینگو اور چکن گنیا کے مریضوں کی تعداد سیکڑوں تک پہنچ چکی ہے اور ان میں سے تقریباً تین درجن مریض اب تک جاں بحق ہو چکے ہیں ۔ اسی کے پیش نظر میرٹھ میں واقع آیوشمان یوگ سنستھان مغربی یو پی کے مختلف علاقوں میں مفت دوا تقسیم کیمپوں کا اہتمام کر رہا ہے ۔

Loading...

Loading...