میرٹھ میں چھیڑ چھاڑ سے پریشان طالبات ہوسٹل میں ہوئیں قید ، لگائے سنگین الزامات

اترپردیش سرکار بھلے ہی خواتین کے تحفظ کو لے کر لاکھوں دعوے کررہی ہو ، لیکن سب کھوکھلا ہی نظر آرہا ہے۔

Sep 09, 2018 03:01 PM IST | Updated on: Sep 09, 2018 03:01 PM IST
میرٹھ میں چھیڑ چھاڑ سے پریشان طالبات ہوسٹل میں ہوئیں قید ، لگائے سنگین الزامات

علامتی تصویر

اترپردیش سرکار بھلے ہی خواتین کے تحفظ کو لے کر لاکھوں دعوے کررہی ہو ، لیکن سب کھوکھلا ہی نظر آرہا ہے۔ تازہ معاملہ میرٹھ کے ایک ہوسٹل کا ہے ، جہاں چھیڑ چھاڑ سے پریشان طالبات نے ہاسٹل سے باہر نکلنا ہی چھوڑ دیا ہے۔ وہیں پولیس بھی اس معاملہ میں لاپروائی برت رہی ہے۔

پورا معاملہ لال کرتی علاقہ کے گرلس ہوسٹل کا ہے۔ ایک منچلے کے خوف سے طالبات نے ہوسٹل سے باہر نکلنا ہی چھوڑ دیا ہے۔ طالبات کا کہنا ہے کہ ایک منچلا سڑک پر طالبات کو تنہا دیکھ کر چھیڑ چھاڑ کرتا ہے ۔ منچلے کی یہ حرکت پاس میں نصب سی سی ٹی وی میں بھی قید ہوگئی ہے۔

منچلے کی اس حرکت کی متاثرہ طالبات کے اہل خانہ نے پولیس سے بھی شکایت کی ہے، لیکن نتیجہ صفر رہا ۔ طالبات خواتین تھانہ بھی اپنی فریاد لے کرپہنچی ۔ مگر خواتین تھانہ سے بھی طالبات کو بیرنگ ہی لوٹنا پڑا۔

Loading...

Loading...