اترپردیش : نسبندی کیمپ میں 30 خواتین کو بیہوشی کا انجکشن لگا کر فرار ہوا ڈاکٹر

اکھلیش حکومت کے دعووں کے باوجود یوپی کے جونپور میں ڈاکٹروں کی بڑی لاپروائی سامنے آئی ہے ۔ یہاں مہاراج گنج پرائمری ہیلتھ سینٹر پر نسبندی کرانے کے لئے آئیں 30 خواتین کو بیہوشی کا انجکشن لگا کر ڈاکٹر فرار ہوگئے

Sep 01, 2016 09:46 AM IST | Updated on: Sep 01, 2016 09:46 AM IST
اترپردیش : نسبندی کیمپ میں 30 خواتین کو بیہوشی کا انجکشن لگا کر فرار ہوا ڈاکٹر

جونپور : اکھلیش حکومت کے دعووں کے باوجود یوپی کے جونپور میں ڈاکٹروں کی بڑی لاپروائی سامنے آئی ہے ۔ یہاں مہاراج گنج پرائمری ہیلتھ سینٹر پر نسبندی کرانے کے لئے آئیں 30 خواتین کو بیہوشی کا انجکشن لگا کر ڈاکٹر فرار ہوگئے  ۔ ڈاکٹر کے فرار ہونے کے بعد درد سے کراہ رہی خاتون کو چھوڑ کر اسپتال کے دیگر عملہ بھی کلینک میں تالابند کرکے فرار ہو گئے ۔  اس کی اطلاع ملتے ہی مریض اور ان کے اہل خانہ کے ہوش اڑ گئے ۔

جونپور ضلع کے مہاراج گنج کمیونٹی سینٹر میں خواتین نسبندی کیمپ لگا تھا ۔ اس میں سرجن ڈاکٹر پروین کمار نے منگل شام 5 بجے سی ایچ سی پر پہنچ کر 30 خواتین کو نسبندی کے لئے بیہوشی کا انجکشن لگا دیا ۔ سبھی خواتین کو بیہوشی کی حالت میں فرش پر لٹا دیا گیا ۔ اس دوران ڈاکٹر نے بے ہوشی کی حالت میں اندو گوتم نامی خاتون کا پیٹ پھاڑ کر زمین پر لیٹا دیا ۔ اس کے بعد رات 8 بجے ڈاکٹر مشین خراب ہونے کی بات کہہ کر وہاں سے فرار ہو گیا ۔

Loading...

یہ دیکھ کر اسپتال میں موجود دیگر ڈاکٹر اور ملازم بھی اسپتال میں تالا لگا کر فرار ہو گئے ۔ ایسے میں وہاں موجود آشا کارکن اور ساتھ آئے لواحقین گھبرا گئے ۔ ادھر اطلاع ملتے ہی اسپتال پر گاؤں کے سینکڑوں لوگوں کی بھیڑ جمع ہو گئی ۔  ایک دیہی نے واقعہ کی معلومات سی ایم او اور ڈی ایم کو دی ۔ اس کے بعد بھی رات 9.30 تک کسی افسر کے نہیں پہچنے پر لوگوں نے ہنگامہ شروع کردیا ۔

تاہم بعد میں ایس او اروند یادو نے موقع پر پہنچ کر لوگوں کو کسی طرح سمجھایا ، جس کے بعد لواحقین نسبندی کرانے آئیں خواتین کو اپنے گھر لے جانے کے لیے تیار ہوگئے ۔ ڈی ایم نے اس معاملے کی جانچ کا حکم دیدیا ہے۔  تاہم  سی ایم او ڈاکٹر رویندر کمار کا کہنا ہے کہ تکنیکی خرابی کی وجہ سے آپریشن بند کرنا پڑا ۔

Loading...