کانپور میں سب انسپکٹر کی بیٹی کے ساتھ اجتماعی آبروریزی، ملزمان گرفتار

پولس کے مطابق سبھی ملزمان ایم ٹیک، بی ٹیک کے طالب علم ہیں اور ان میں سے ایک طالب علم پولس اہلکار کا بیٹا ہے۔

Dec 27, 2018 09:26 AM IST | Updated on: Dec 27, 2018 12:16 PM IST
کانپور میں سب انسپکٹر کی بیٹی کے ساتھ اجتماعی آبروریزی، ملزمان گرفتار

علامتی تصویر

اترپردیش کے کانپور میں انجینئرنگ کے طالب علموں پر پولس سب انسپکٹر کی نابالغ بیٹی کے ساتھ اجتماعی آبروریزی کی واردات انجام دینے کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ پولس نے بدھ کو بتایا کہ کانپور میں تعینات سب انسپکٹر کی 15 سالہ بیٹی کے ساتھ چار انجینئرنگ کے طلبہ نے اجتماعی طور پر آبروریزی کی۔ 11 ویں کلاس کی طالبہ کےساتھ منگل دیر رات یہ واردات انجام دیا گیا۔

ان ملزمان نے بے ہوشی کی حالت میں متاثرہ طالبہ کو بابو پوروا تھانے کے سامنے پھینک کر بھاگ گئے۔ راہ گیروں نے اس معاملے کی اطلاع پولس کو دی۔ انہوں نےبتایا کہ متاثرہ لڑکی کو یشودا نگر میں واقع ایک نجی اسپتال میں بھرتی کرایا گیا ہے۔ معاملے کی اطلاع ملتے ہی سینئر پولس سپرنٹنڈنٹ انت دیو، پولس سپرنٹنڈنٹ (مغرب) سنجیو سمن، پولس اسسٹنٹ سپرنٹنڈنٹ، فورنسک ٹیم کے ساتھ پہنچے۔

متاثرہ لڑکی نے سینئر افسران کو ابتدائی بیان میں بتایا کہ منگل کو وہ اپنی سہیلی کے ساتھ کالج گئی تھی جہاں انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کررہے انوراگ نامی طالب علم اسے بہلا پھسلا کر کاکا دیو کے گیتا نگر میں واقع ابھا اپارٹمنٹ لے گیا۔ اپارٹمنٹ میں پہلے سے موجود اس کے تین دیگر ساتھیوں جیکی، ابھیشیک اور شوبھم موجود تھے۔

Loading...

متاثرہ لڑکی کی ان طالب علموں نے آبروریزی کی اور کار میں بیٹھا کر اسے پھینک کر چلے گئے۔ اس معاملے میں کاکا دیو پولس نے ایف آئی آر درج کرتے ہوئے بدھ کو دو ملزمان کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ حادثے کے سلسلے میں پولس ان سے پوچھ تاچھ کررہی ہے۔ مفرور دو دیگر ملزمان کی تلا ش پولس کی ٹیمیں کررہی ہیں۔ پولس کے مطابق سبھی ملزمان ایم ٹیک، بی ٹیک کے طالب علم ہیں اور ان میں سے ایک طالب علم پولس اہلکار کا بیٹا ہے۔

Loading...