اتراکھنڈ میں ہریش راوت سرکار کی اگنی پریکشا ، بی جے پی نے کیا حکومت سازی کا دعوی پیش ، باغیوں سمیت 35 ممبران اسمبلی پہنچے دہلی

دہرادون : اتراکھنڈ میں جمعہ کی شام تیزی سے حالات بدلے ۔ کانگریس کے کچھ باغی ممبران اسمبلی کے دم پر ریاست میں بی جے پی نے گورنر سے ملاقات کر کے حکومت سازی کا دعوی پیش کر دیا ہے ۔ ادھر وزیر اعلی ہریش راوت نے بی جے پی پر الزام لگایا ہے کہ وہ پیسے کے دم پر ریاستی حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے دعوی کیا کہ بی جے پی کے پانچ اراکین اسمبلی ان کے رابطے میں ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اکثریت ثابت کر دیں گے ۔ حکومت پر کوئی خطرہ نہیں ہے ۔

Mar 19, 2016 12:09 AM IST | Updated on: Mar 19, 2016 09:16 AM IST
اتراکھنڈ میں ہریش راوت سرکار کی اگنی پریکشا ،  بی جے پی نے کیا حکومت سازی کا دعوی پیش ، باغیوں سمیت 35  ممبران اسمبلی پہنچے دہلی

دہرادون : اتراکھنڈ میں جمعہ کی شام تیزی سے حالات  بدلے ۔ جہاں کانگریس کے کچھ باغی ممبران اسمبلی کے دم پر ریاست میں بی جے پی نے گورنر سے ملاقات کر کے حکومت سازی  کا دعوی پیش کر دیا ہے  وہیں حکومت کو گرانے کے لئے ووٹنگ کرنے والے 35 ممبران اسمبلی دہلی پہنچ گئے ۔ تمام ممبران اسمبلی نے دیر رات تقریبا 2 بجے  چارٹرڈ طیارے سے دہلی کا رخ کیا ہے ۔ دہلی پہنچنے والے 35 اراکین اسمبلی میں کانگریس کے 9 باغی ممبر اسمبلی اور 26 بی جے پی ممبر اسمبلی ہیں ۔

ان 35 ارکان اسمبلی کے ساتھ ہرک سنگھ راوت بھی دہلی آئے ہیں ۔ انہوں نے دہرادون کے جالی  گرانٹ ہوائی اڈے پر میڈیا سے گفتگو کے دوران الزام لگایا کہ وزیر اعلی ہریش راوت حکومت بچانے کے لئے اراکین اسمبلی کی خرید و فروخت کر سکتے ہیں ، اسی لئے انہوں نے تمام اپوزیشن اراکین اسمبلی کے ساتھ دہلی کا رخ کیا ہے۔

 ادھر وزیر اعلی ہریش راوت نے بی جے پی پر الزام لگایا ہے کہ وہ پیسے کے دم پر ریاستی حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے دعوی کیا کہ بی جے پی کے پانچ اراکین اسمبلی ان کے رابطے میں ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اکثریت ثابت کر دیں گے ۔ حکومت پر کوئی خطرہ نہیں ہے ۔

UK-MLA

Loading...

اس سے قبل کانگریس کے باغی وزیر ہرک سنگھ راوت کا کہنا ہے کہ مالی بل پاس ہی نہیں ہوا ۔ بی جے پی کے 26 اور ہم 9 اراکین اسمبلی نے خلاف میں ووٹ دیا ۔ ایسے میں بل پاس کہاں سے ہو جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ابھی بھی 35 اراکین اسمبلی ایوان میں موجود ہیں۔ ایوان میں کل 67 ممبران اسمبلی موجود تھے ۔ 35 ممبران اسمبلی نے خلاف میں  ووٹ دیا ہے ۔ باغی تیور دکھاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم گورنر کے پاس جا رہے ہیں ۔ بدعنوانیوں کا راج  ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس 36 ممبران اسمبلی ہیں ، جو حکومت بنانے کے لئے کافی ہے ۔

harish-rawat

Loading...