بابری مسجد کیس کے مدعی ہاشم انصاری پورے اعزاز کے ساتھ سپرد خاک

ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اور پولس سپرنٹنڈیٹ کی موجودگی میں آج شام گارڈ آف آنر کے بعد اجودھیا میں مسجد شیش کے برابر میں واقع قبرستان میں پورے اعزاز کے ساتھ سپرخاک کر دیا گیا

Jul 20, 2016 11:01 PM IST | Updated on: Jul 20, 2016 11:01 PM IST
بابری مسجد کیس کے مدعی ہاشم انصاری پورے اعزاز کے ساتھ سپرد خاک

اجودھیا : متنازعہ بابری مسجد کے مدعی ہاشم انصاری کی میت کوڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اور پولس سپرنٹنڈیٹ کی موجودگی میں آج شام گارڈ آف آنر کے بعد اجودھیا میں مسجد شیش کے برابر میں واقع قبرستان میں پورے اعزاز کے ساتھ سپرخاک کر دیا گیا۔

مرحوم ہاشم انصاری کا طویل علالت کے بعد آج صبح تقریبا پانچ بجے انتقال ہو گیا تھا۔جنازے میں کل ہند مجلس مشاورت کے صدر مسٹر نوید حامد، ظفریاب جیلانی، مشتاق صدیقی ایڈوکیٹ اور دیگر شعبہ ہائے زندگی کے اہم نمائندوں نے شرکت کی۔

ان کے انتقال کی خبر سنتے ہی سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے قدآور لیڈر اور ریاست کے شہر کی ترقی کے وزیر محمداعظم خاں ان کے گھر گئے۔مسٹر خان نے کہا کہ مرحوم انصاری نے بابری مسجد کی بازیابی کے لئے کافی جدوجہد کی ان کا نہ رہنا بہت بڑی نقصان ہے۔

اس موقع پر ریاست کے بنیادی وزیر تعلیم وزیر احمد حسن، وزیر جنگلات تیج نارائن پانڈے، ہنومان گڑھی کے مهنت گیان داس، ایم ایل اے آنند سین، ایم ایل سی لیلاوتی کشواہا، آل انڈیا اكھاڑا پریشد کے صدر نریندر گری، شریرام بلبھ كنج کے افسر راج کمار داس، کانگریس پارٹی کے ایودھیا اسمبلی کے امیدوار مهنت گریش پتی ترپاٹھی، انڈین مسلم لیگ کے صوبائی صدر ڈاکٹر نجم الحسن غنی، سابق ممبر اسمبلی جتیندر سنگھ ببلو، ڈویزنل کمشنر، ڈپٹی انسپکٹر جنرل آف پولس سینئر پولس سپرنٹنڈنٹاور ہندو مسلم معاشرے کے کافی لوگ موجود تھے۔

Loading...

واضح رہے کہ 96 سالہ ہاشم انصاری دل کی بیماری لاحق تھی۔دو سال پہلے انہیں میڈیکل یونیورسٹی لکھنؤ میں داخل کرایا گیا تھا۔ پسماندگان میں ایک بیٹی اور ایک بیٹا ہے۔

Loading...
Listen to the latest songs, only on JioSaavn.com