ہائی کورٹ کا اہم فیصلہ : عیدالاضحیٰ پرکھلے میں بکرے کی قربانی نہ کی جائے

ہائی کورٹ نے حکومت اور تمام ضلعی مجسٹریٹوں سے کہا ہے کہ وہ عدالت کے حکم پر عملدرآمد یقینی بنائیں۔ عدالت نے یہ بھی کہا کہ جانوروں کا خون نالیوں میں نہ بہے اور باقیات کھلے میں نہ رکھے جائیں۔ عدالت نے یہ ہدایت تمام مذاہب کے لئے جاری کی ہے۔

Aug 22, 2018 10:34 AM IST | Updated on: Aug 22, 2018 10:36 AM IST
ہائی کورٹ کا اہم فیصلہ : عیدالاضحیٰ پرکھلے میں بکرے کی قربانی نہ کی جائے

اتراکھنڈ ہائی کورٹ نے اپنے اہم فیصلے میں منگل کو عیدالاضحی کے موقع پر عوامی مقامات پر، مذہبی مقامات کے سامنے اور کھلی جگہوں پر جانوروں کی قربانی پر پابندی لگا دی ہے۔ہائی کورٹ نے حکومت اور تمام ضلعی مجسٹریٹوں سے کہا ہے کہ وہ عدالت کے حکم پر عملدرآمد یقینی بنائیں۔ عدالت نے یہ بھی کہا کہ جانوروں کا خون نالیوں میں نہ بہے اور باقیات کھلے میں نہ رکھے جائیں۔ عدالت نے یہ ہدایت تمام مذاہب کے لئے جاری کی ہے۔

کارگزار چیف جسٹس راجیو شرما اور جج منوج کمار تیواری پر مشتمل بنچ نے اس سلسلہ میں دائر مفاد عامہ کی عرضی پر سماعت کے بعد یہ ہدایت دی ہے۔عدالت نے ہلدوانی میں واقع ہند ومہاسبھا کے صدر پرشانت اگروال کے خط کا نوٹس لیتے ہوئے اس معاملہ میں مفاد عامہ کی ایک عرضی داخل کرلی تھی ۔ آج اس معاملہ پر سماعت ہوئی۔

عدالت نے کہاکہ عیدالاضحی کے موقع پر کسی بھی طرح کے جانور کی قربانی یا بلی کھلی جگہ، گلیوں یا عوامی مقامات پر نہیں دی جائے گی۔ عدالت نے مذبح خانوں میں ہی بلی دینے کا حکم دیا۔

Loading...

Loading...