کشمیر: میرواعظ اور یاسین ملک سمیت کئی علیحدگی پسند لیڈران کے گھروں پر این آئی اے کا چھاپہ

اس دوران مشترکہ مزاحمتی قیادت کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ این آئی اے کی ٹیمیں بغیر اجازت حاصل کئے قائدین کے گھروں میں داخل ہوئیں۔

Feb 26, 2019 08:16 PM IST | Updated on: Feb 26, 2019 08:26 PM IST
کشمیر: میرواعظ اور یاسین ملک سمیت کئی علیحدگی پسند لیڈران کے گھروں پر این آئی اے کا چھاپہ

) قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے منگل کے روز یہاں کئی علیحدگی پسند لیڈران بشمول حریت کانفرنس (ع) چیئرمین میرواعظ مولوی عمر فاروق، جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ چیئرمین محمد یاسین ملک ، تحریک حریت چیئرمین محمد اشرف صحرائی، ڈیموکریٹک فریڈم پارٹی کے سربراہ شبیر احمد شاہ ،حریت کانفرنس (گ) چیئرمین سید علی گیلانی کے فرزند سید نسیم گیلانی اور سالویشن مومنٹ کے چیئرمین ظفر اکبر بٹ کے گھروں پر چھاپے مارے۔ جن علیحدگی پسند لیڈران کے گھروں پر چھاپے مارے گئے، ان میں سے نصف تعداد مختلف جیلوں بشمول دلی کی تہاڑ جیل میں مقید ہیں۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ تحقیقاتی ایجنسی نے منگل کی صبح سے سری نگر میں مختلف جگہوں پر چھاپے ڈالے۔ تاہم انہوں نے ضبطی سے متعلق تفصیلات منکشف کرنے سے معذرت ظاہر کردی۔

اس دوران مشترکہ مزاحمتی قیادت کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ این آئی اے کی ٹیمیں بغیر اجازت حاصل کئے قائدین کے گھروں میں داخل ہوئیں۔

بیان میں کہا گیا 'منگل کی صبح سویرے این آئی اے نامی بھارتی ایجنسی کے آفیسران پولیس اور سی آر پی ایف کی بھاری جمعیت کے ساتھ مختلف مزاحمتی قائدین بشمول میر واعظ محمد عمر فاروق، اسیر محمد یاسین ملک ، محمد اشرف خان صحرائی، اسیر سید شبیر احمد شاہ، سید نسیم گیلانی فرزند سید علی شاہ گیلانی اور ظفر اکبر بٹ کے گھروں پر وارد ہوئے اور بلا کسی اجازت طلب کئے سیدھے ان گھروں میں گھس گئے اور وہاں توڑ پھوڑشروع کردی جبکہ مکینوں کو بھی ہراساں کیا ۔این آئی اے کی اس چھاپہ ماری اور تلاشی مہم کی زد میں آنے والے گھر اور خاندان میں سے کئی ایک صبح سے شا دیر گئے تک محاصرے میں ہی رکھے گئے'۔

یہ چھاپہ مار کاروائیاں ظاہری طور پر این آئی اے میں درج ٹیرر فنڈنگ کیس کے سلسلے میں انجام دی گئیں۔ مذکورہ کیس میں اب تک قریب ایک درجن کشمیری علیحدگی پسند رہنماﺅں اور معروف تاجروں کو گرفتار کیا جاچکا ہے جنہیں دلی کی تہاڑ جیل میں مقید رکھا گیا ہے۔

Loading...

موصولہ اطلاعات کے مطابق این آئی اے اہلکاروں نے منگل کی صبح نگین حضرت بل میں واقع میرواعظ عمر فاروق کی رہائش گاہ پر چھاپہ مارا اور تلاشی کاروائی شروع کی۔ قبل ازیں این آئی اے نے مائسمہ میں واقع یاسین ملک کی رہائش گاہ پر چھاپہ مارا اور گھر کی وسیع پیمانے پر تلاشی لی۔ این آئی اے ٹیم کے ساتھ مقامی پولیس اور سی آر پی ایف کے اہلکار بھی تھے۔

اس دوران لبریشن فرنٹ کے ایک ترجمان نے بتایا کہ ریاستی پولیس اور فورسز نے منگل کی صبح مسٹر ملک کے گھر کو چاروں اطراف سے محاصرے میں لیا جس کے بعد این آئی اے کی ایک ٹیم نے مکان کے اندر داخل ہوکر تلاشیں لیں۔ انہوں نے بتایا کہ چھاپہ مار کاروائی کے دوران میڈیا کو بھی فرنٹ چیئرمین کے گھر کے نزدیک جانے نہیں دیا گیا۔

بتادیں کہ یاسین ملک اس وقت پولیس تھانہ کوٹھی باغ میں مقید ہیں۔ انہیں ریاستی پولیس نے 22 اور 23 فروری کی درمیانی رات کے دوران گرفتار کیا تھا۔

Loading...